جامعہ اسلامیہ راولپنڈی میں وفاق المدارس العربیہ کا ہنگامی اجلاس

جامعہ اسلامیہ راولپنڈی میں وفاق المدارس العربیہ کا ہنگامی اجلاس

  

پبی (نما ئندہ پاکستان) جامعہ اسلامیہ راولپنڈی میں وفاق المدارس العربیہ کا ہنگامی اجلاس منعقد ہوا، دلچسپی کی بات یہ دیکھنے میں آئی کہ دو دن کے شارٹ نوٹس پر عید تعطیلات کے باوجود سینکڑوں علماء کرام و مشائخ کی شرکت ہوئی۔ اجلاس میں 10 شوال المکرم سے حسب معمول مدارس میں داخلے شروع کرنے اور 20 شوال سے تعلیمی سلسلے کے آغاز کا اعلان کیا گیا۔ جبکہ حتمی فیصلہ وفاق المدارس اور اتحاد تنظیمات مدارس کی قیادت کرے گی۔ یہ بھی طیپایا کہ جمعہ اجتماعات میں قوم کو مدارس کی ضرورت و اہمیت سے آگاہ کیا جائے گا... پرائیویٹ اسکولز اور زندگی کے دیگر شعبوں کے ذمہ داران سے بھی مشاورت کی جائے گی... تبلیغی مراکز کھلوانے اور تبلیغی جماعت کی سرگرمیاں شروع کروانے کے لیے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی تفصیلات کے مطابق وفاق المدارس العربیہ پاکستان کا ہنگامی اجلاس جامعہ اسلامیہ صدر راولپنڈی میں ممتاز روحانی شخصیت مولانا پیر محمدعزیز الرحمن ہزاروی مدظلہم رکن مجلس عاملہ وفاق المدارس کی سرپرستی، شیخ الحدیث مولانا قاضی عبدالرشید مدظلہم ناظم وفاق پنجاب کی صدارت اور مولانا ڈاکٹر قاری عتیق الرحمن مدظلہ امیر جمعیت علماء اسلام پنجاب کی میزبانی میں منعقد ہوا اجلاس میں اسلام آباد راولپنڈی,مری,کہوٹہ,اٹک, حضرو,ٹیکسلا,حسن ابدال سمیت دیگر قریبی علاقوں سے علماء کرام,مساجد کے ائمہ و خطباء اور مدارس کے منتظمین کی بہت بڑی تعداد نے شرکت کی-یاد رہے کہ اتنے شارٹ نوٹس پر عید کے تعطیلات کے باوجود اتنابھرپور اجتماع اپنی نوعیت کا منفرد اجتماع تھا-علماء کرام نے دینی مدارس کھولنے اور مدارس کی حریت و آزادی پر کسی قسم کا کمپرومائز نہ کرنے کے دیرینہ عزم کا اعادہ کیا- اجلاس میں میں طے پایا کہ تمام تجاویز اور مطالبات مدارس کی قیادت اور دینی سیاسی جماعتوں کے قائدین کے سامنے رکھی جائیں -جبکہ حکومت کے دوہرے رویوں اور امتیازی پالیسیوں کی وجہ سے ہم حکومت سے کسی قسم کا مطالبہ نہیں کرتے.علماء کرام نے کہا کہ اگر بازار کھل سکتے ہیں اور جلوس نکل سکتے ہیں تو مدارس کیوں نہیں کھولے جاسکتے؟؟ اعلامیہ میں کہا گیا کہ علماء کرام نے ایس او پیز خود تیار کر لیئے ہیں۔ اور جس طرح اس سے قبل مساجد کے معاملے میں جملہ احتیاطی تدابیر پر عمل کیا گیا اسی طرح مدارس کے معاملے میں بھی تمام احتیاطی تدابیر پیش نظر رکھتے ہوئے تعلیم و تعلم کا سلسلہ شروع کریں گے۔ اس بات پہ زور دیا گیا کہ موجودہ حالات میں اللہ رب العزت کی رحمت کے حصول اور وبا سے نجات کے لیے مدارس کا کھلنا بیحد ضروری ہے. اجلاس کے شرکاء نے وفاق المدارس کی مرکزی قیادت سے طلبہ و طالبات کے سالانہ امتحانات کے حوالے سے فی الفور کوء فیصلہ کرنے کا بھی مطالبہ کیا تاکہ طلبہ کی بے چینی دور کی جا سکے... اس اہم ترین ہنگامی اجلاس میں مسوول وفاق المدارس اسلام آباد و مہتمم جامعہ محمدیہ مولانا ظہور احمد علوی,مولانا اشرف علی,مولانا نذیر احمد فاروقی,مولانا عبدالغفار,مولانا عبدالمجید ہزاروی,مولاناعبدالغفار توحیدی مولانا عبدالقدوس محمدی,مولانا قاری فضل ربی,مولانا تاج محمود,مفتی اویس عزیز,مولانامحمد قاسم,مولانا مفتی خالد عباسی,مولانا قاری سعید عباسی,مولاناسعیدالرحمٰن سرور، مولاناحمدْاللہ، حضرو سے مولانا محمد انس,کہوٹہ سے مولانا عبداللہ, مولانا عثمان عثمانی,گوجر خان سے مولانا ریاض عثمانی,روات سے مولانا عتیق الرحمن,مولانا سعید الرحمن سرور,مولانا محمد علی قریشی,مولانا جلال شاہ,مفتی دوست محمد مزاری,مولانا محمد فاروق جلالی,مولانا قاضی ہارون الرشید,مولاناغلام نبی ہزاروی سمیت بہت بڑی تعداد میں علماء کرام و مشائخ عظام اور شیوخ حدیث نے شرکت کی-

مزید :

پشاورصفحہ آخر -