بھارت کا پلوامہ حملے کا ڈرامہ بے نقاب، مبینہ حملہ آورعادل ڈار 2017ءسے بھارتی حراست میں ہونے کا انکشاف

بھارت کا پلوامہ حملے کا ڈرامہ بے نقاب، مبینہ حملہ آورعادل ڈار 2017ءسے بھارتی ...
بھارت کا پلوامہ حملے کا ڈرامہ بے نقاب، مبینہ حملہ آورعادل ڈار 2017ءسے بھارتی حراست میں ہونے کا انکشاف

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) بھارت کا ایک اور جھوٹ بے نقاب ہو گیا۔مبینہ طور پر پلوامہ حملہ کرنے والے عادل ڈارکے2017سے بھارت فوج کی حراست میں ہونے کاانکشاف ہواہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق کشمیر ٹائمز کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بھارتی فورسز نے عادل ڈار کو10ستمبر2017 کو بہاربھگ آپریشن میںگرفتارکیاتھا جبکہ اس آپریشن میں 2کشمیری نوجوان کو شہید بھی کر دیا تھا اور بھارت نے ان تینوں کا تعلق حزب المجاہدین سے ظاہر کیا تھا۔ پلوامہ حملے کے فوراً بھارتی فورسز نے اسی عادل ڈارکا تعلق جیش محمد سے جوڑ دیا۔اس طرح بھارت کی بمبئی حملوں کے بعد پلوامہ حملے کی ہنڈیا بھی بیچ چوراہے میں پھوٹ گئی۔بھارتی فوج کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل ڈی ایس ہودا نے اعتراف کیا ہے کہ پلوامہ حملے میں بھارت کا ہی بارود استعمال کیا گیا۔

حملے میں ساڑھے سات سو پاﺅنڈ بارود استعمال کیا گیا۔ بھارتی لیفٹیننٹ جنرل ڈی ایس ہودانے نیویارک ٹائمز کو بتایا کہ یہ ممکن نہیں کہ اتنی بڑی مقدار میں بارود در اندازی کرکے اتنی دور لایا جاسکے۔ انکی رائے میں جموں شاہراہ کو چوڑا کرنے کیلئے پہاڑوں کو اڑانے کی غرض سے بارود جمع کیا گیا تھا اور دھماکے کیلیے یہی استعمال کیا گیا، یہ وہی شاہراہ ہے جہاں حملہ ہوا جبکہ اس کے 6کلومیٹر دور حملہ آور کا گھر ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -