چینی کمیشن نے رپورٹ میں ذمے داروں کاتعین نہیں کیا، شاہد خاقان عباسی

چینی کمیشن نے رپورٹ میں ذمے داروں کاتعین نہیں کیا، شاہد خاقان عباسی
چینی کمیشن نے رپورٹ میں ذمے داروں کاتعین نہیں کیا، شاہد خاقان عباسی

  

راولپنڈی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما شاہدخاقان عباسی نے کہاہے کہ چینی کمیشن نے 347 صفحات کی رپورٹ شائع کی لیکن حقائق نہیں بتائے گئے،چینی کمیشن نے رپورٹ میں ذمے داروں کاتعین نہیں کیا۔

شاہد خاقان عباسی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ کمیشن اس لیے بنا تھا کہ چینی کی قیمت کیوں بڑھی، تعین کیا جائے،چینی کمیشن کی رپورٹ میں اصل ذمے داران، وزیر اعظم، اسد عمر کا نام شامل نہیں ، چینی کمیشن رپورٹ میں مرکزی کردارعمران خان کا نام موجود نہیں، انہوں نے کہاکہ ہر روز کرائے کا آدمی پریس کانفرنس کرتا ہے،وزیرگفتگو کیوں نہیں کرتے، جب سے کمیشن بنااس وقت سے آج تک چینی کی قیمتوں میں 20 فیصد اضافہ ہوا۔

شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ چینی برآمد کرنے کا فیصلہ وفاقی کا بینہ کا تھا،وفاقی کا بینہ کی سربراہی وزیرا عظم کرتے ہیں،ذمے دار عمران خان ہیں،شوگرمافیا تحریک انصاف میں بیٹھا ہوا ہے ، انہوں نے کہاکہ چینی کی برآمد ن لیگ کے دور میں بھی ہوئی،قیمتیں کنٹرول رکھی گئیں، نا اہل، نا لائق افسروں پرمشتمل کمیشن پر کمیشن بنایا جا رہا ہے، لیگی رہنما نے کہاکہ کورونا سے نمٹنے میں حکومت ناکام ہوچکی ہے، مجھ سے جہانگیر ترین کا کوئی رابطہ نہیں ہوا۔

مزید :

قومی -علاقائی -پنجاب -راولپنڈی -