”بھارت کی بیٹنگ دیکھ کر کرس گیل، جیسن ہولڈر اور ایندرے رسل میرے پاس آئے اور بولے۔۔۔“ بین سٹوکس کے دعوے کے بعد مشتاق احمد نے بھی تہلکہ خیز انکشاف کر دیا

”بھارت کی بیٹنگ دیکھ کر کرس گیل، جیسن ہولڈر اور ایندرے رسل میرے پاس آئے اور ...
”بھارت کی بیٹنگ دیکھ کر کرس گیل، جیسن ہولڈر اور ایندرے رسل میرے پاس آئے اور بولے۔۔۔“ بین سٹوکس کے دعوے کے بعد مشتاق احمد نے بھی تہلکہ خیز انکشاف کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے آل راﺅنڈر بین سٹوکس نے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) ورلڈکپ 2019ءکے میچ میں بھارت کی مشکوک ہار سے متعلق گفتگو کر کے ایک نیا پنڈورا باکس کھول دیا ہے جبکہ اس کے بعد قومی ٹیم کے سابق سپنر مشتاق احمد نے بھی انکشاف کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بین سٹوکس نے اپنی کتاب ”آن فائر“ میں لکھا کہ انگلینڈ کیخلاف میچ میں بھارت کے مہندرا سنگھ دھونی کی جانب سے جیت کی کوشش نظر نہیں آئی جبکہ ابتدائی اوورز میں روہت شرما اور ویرات کوہلی کی بیٹنگ کی مشکوک تھی۔ بین سٹوکس کے اس دعوے کے بعد پاکستانی کرکٹرز کا کہنا ہے ان کے شکوک و شبہات کی تصدیق ہو گئی ہے کہ بھارت نے صرف پاکستان کو ٹورنامنٹ سے باہر رکھنے کی غرض سے جان بوجھ کر میچ میں شکست کھائی۔

پاکستان کے سابق سپنر مشتاق احمد اس ایونٹ میں ویسٹ انڈیز ٹیم کیساتھ بطور باﺅلنگ کوچ کام کر رہے تھے جن کا کہنا ہے کہ ”عمومی طور پر جب آپ کو ایک اوور میں 10 کا رن ریٹ درکار ہو اور آپ کے پاس وکٹیں بھی ہوں تو آپ نے چانس لینا ہوتا ہے۔ جب آپ اپوزیشن کیخلاف کھیل رہے ہوں اور میچ آخر تک لے جاتے ہو تو مخالف ٹیم کے کمزور باﺅلرز پر حملہ کرنا ہوتا ہے۔ ہمیں یہ احساس ہو گیا تھا کہ یہ کیا کر رہے ہیں۔ “

انہوں نے کہا ”مجھے تو ویسٹ انڈیز کے کھلاڑیوں، جیسا کہ کپتان جیسن ہولڈر، اینڈرے رسل اور کرس گیل سمیت سب ہی بول رہے تھے کہ وہ پاکستان کو ٹورنامنٹ کے سیمی فائنل میں نہیں دیکھنا چاہتے۔“

مزید :

کھیل -