ٹیم سے باہر ہونے پراپنی کارکردگی کا تجزیہ کیا‘ صہیب مقصود

  ٹیم سے باہر ہونے پراپنی کارکردگی کا تجزیہ کیا‘ صہیب مقصود

  



لاہور(سپورٹس رپورٹر)پاکستان کرکٹ ٹیم کے مڈل آرڈر بیٹسمین صہیب مقصود کا کہنا ہے کہ ٹیم سے باہر ہونے کے بعد انہوں نے اپنی کارکردگی کا تجزیہ کیا اور اندازہ ہوا کہ انہیں اپنی شاٹ سلیکشن بہتر کرنے کی ضرورت ہے، کچھ فٹنس مسائل بھی کیریئر کی راہ میں حائل ہوئے۔کراچی میں سدرن پنجاب اور سندھ کے درمیان قائد اعظم ٹرافی میچ کے بعد میڈیا سے گفتگو میں صہیب مقصود نے کہا کہ انہوں نے اپنی فٹنس پر بہت کام کیا ہے، انہیں اندازہ ہے کہ آج کے دور میں فٹنس کی بہت زیادہ اہمیت ہے اس لیے فٹنس میں معیار کو برقرار رکھنا ضروری ہے۔ملتان سے تعلق رکھنے والے 32 سالہ بیٹسمین نے کہا کہ انہوں نے ٹیم سے ڈراپ ہونے کے بعد اپنی کارکردگی کا تجزیہ کیا اور ان خامیوں کو پہچاننے کی کوشش کی جو ان کے کیرئیر میں حائل ہوئیں۔26 ون ڈے اور 20 ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلنے والے پلیئر نے کہا کہ انہیں اندازہ ہوا ہے کہ کارکردگی میں تسلسل لانا ضروری ہے، ففٹیز کو سنچریز میں تبدیل کرنا اور شاٹس سلیکشن ان کے دو مسائل تھے جس پر انہوں نے کام کیا جس کی وجہ سے ان کا کھیل بہتر ہوا۔

2016 میں دورہ نیوزی لینڈ میں آخری مرتبہ پاکستان کی نمائندگی کرنے والے جارح مزاج بیٹسمین صہیب مقصود کا مزید کا کہنا تھا کہ وہ ڈومیسٹک کرکٹ میں اچھی پرفارمنس دے کر ٹیم میں واپسی کیلئے پر امید ہیں۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی