سپریم کورٹ کا حکومت پنجاب،بار نمائندگان پر مشتمل کمیٹی تشکیل دینے کا حکم

سپریم کورٹ کا حکومت پنجاب،بار نمائندگان پر مشتمل کمیٹی تشکیل دینے کا حکم

  



اسلام آباد (این این آئی)سپریم کورٹ نے جوڈیشل کمپلیکس اوکاڑہ کی تعمیر سے متعلق کیس میں حکومت پنجاب، بار نمائندگان پر مشتمل کمیٹی تشکیل دینے کا حکم دیدیا۔ جمعہ کو کیس کی سماعت کے دور ان وکیل نے کہاکہ مجموعی طور پر 40 کنال زمین تھی، جوڈیشل کمپلیکس کی تعمیر کے لیے مزید زمین درکار ہے۔ وکیل نے کہاکہ مزید 8 کنال زمین کا این او سی بھی ہوگیا ہے۔ جسٹس مشیر عالم نے کہاکہ آپ کو کہا تھا کہ معاملہ آپس میں حل کر لیں۔ وکیل نے کہاکہ یہ تحصیل سب سے بڑی تحصیل ہے 1400 وکیل ہیں اور تعداد بڑھ رہی ہے، حکومت کو زمین ایکوائر کرکے تعمیر کے احکامات دئیے جائیں۔ جسٹس قاضی امین نے کہاکہ بار عدالتی نظام کا حصہ ہے، ہر ملک کا وقار اس کے تعلیمی اداروں اور عدالتوں کے جاہ و جلال سے ہوتا ہے۔جسٹس قاضی امین نے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب سے مکالمہ کرتے ہوئے کہ چاہتے ہیں پنجاب حکومت کا اختیار ان کے پاس ہی رہے۔جسٹس قاضی امین نے کہاکہ معاملہ حل کرنے کے لیے کمیٹی تشکیل دی جاسکتی ہے۔ جسٹس مقبول باقر نے کہاکہ معاملہ ہمیں بظاہر اتنا مشکل نہیں لگتا اس معاملے کو حل کرلیں۔ دلائل سننے کے بعد عدالت نے حکومت پنجاب، بار نمائندگان پر مشتمل کمیٹی تشکیل دینے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 2 ہفتوں کے لیے ملتوی کر دی۔

جوڈیشل کمپلیکس اوکاڑہ

مزید : صفحہ آخر