تھانہ، خوانین اور زمینداروں کی جانب سے زرعی اراضی پر ہاؤسنگ سکیم مسترد

تھانہ، خوانین اور زمینداروں کی جانب سے زرعی اراضی پر ہاؤسنگ سکیم مسترد

  



تھانہ (نمائندہ پاکستان) تھانہ کے زمینداروں اور خوانین نے زرعی اراضی پرحکومت کے ہاؤسنگ سیکم کو مسترد کردیا۔ علاقے میں محدود زرعی اراضی پہلے سے کم ہے اور ہاؤسنگ سکیم سے زمیندار اور اراضی مالکان زیر کاشت زمین سے بالکل محروم ہوجائیں گے۔ اچھے کام کو غلط طریقے سے کروانا ناانصافی اور زیادتی کے ذمرے میں آتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار تھانہ کے کاشکاروں، زمینداروں اور اراضیب مالکان نے پاکستان مسلم لیگ کے سینئر رہنماء شہباز محمد خان کی رہائش گاہ پر پُر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا۔ شہباز محمد خان کے علاوہ حمید اللہ خان ایڈوکٹ، سلطان محمود ایڈوکیٹ، فضل ربی کامریڈ، فضل دیان اور دیگر نے باتیں کرتے ہوئے کہا کہ تھانہ کی بڑھتری ہوئی آبادی کے پیش نظر موجودہ زرعی اراضی انتہائی محدود ہے جو کہ آبادی کی ضروریات پوری نہیں کر سکتی۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ کی مستحق شہریوں کے لئے ہاؤسنگ سکیم ایک اچھا اور مثبت اقدام ہے لیکن اس مقصد کے لئے علاقے کے محدود زرعی اراضی کا استعمال انتہائی زیادتی اور علاقے سمیت لوگوں کے ساتھ ظلم اور نا انصافی ہے۔ متوقع متاثرین نے بروقت علاقے کے منتخب نمائندوں اور حکومت سے درد مندانہ اپیل کی ہے کہ اس نیک اور اچھے کام کے لئے علاقے کے کسی بنجر اور غیر زرعی اراضی کو استعمال میں لائیں۔ تاکہ سانپ بھی مرے اوار لاٹھی بھی نہ ٹوٹے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر