قوم کو ملکی حالت بد لنے کیلئے جماعت اسلامی کا ساتھ دینا ہوگا، پروفیسر ابراہیم

  قوم کو ملکی حالت بد لنے کیلئے جماعت اسلامی کا ساتھ دینا ہوگا، پروفیسر ...

  



مردان(بیورورپورٹ)جماعت اسلامی کے مرکزی نائب امیر پروفیسر محمد ابراھیم خان نے کہاہے کہ ملکی حالت بدلنے کے لئے قوم کو جماعت اسلامی کا ساتھ دینا ہوگا۔چہرے بدلنے سے بلکہ نظام بدلنے سے حقیقی معنوں میں تبدیلی آئے گی۔اگرملک میں اسلامی نظام نافذ ہو جائے تو ملک کی تقدیر بدل سکتی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی کے53کے نومنتخب امیر منظور الحق سے حلف لینے کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تقریب سے جماعت اسلامی کے ضلعی امیر مولانا سلطان محمد،نائب امیر غلام رسول،ضلعی جنرل سیکرٹری سعید اختر ایڈوکیٹ، سابق ضلع نائب ناظم ابراھیم بلند اورنومنتخب امیر منظور الحق نے بھی خطاب کیا۔پروفیسر محمد ابراھیم نے کہاکہ بھارتی مظالم کی وجہ سے چار ماہ سے مظلوم کشمیری قید میں اشیاء خور د ونوش کے لئے ترس رہے ہیں لیکن موجودہ حکمران الزام تراشیوں میں مصروف ہیں۔انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی 22دسمبر کو اسلام آباد میں کشمیری عوام سے یکجہتی اور موجودہ حکمرانوں کی بے حسی کے خلاف مارچ کرئے گی اور حکومت کو اس بات پر مجبور کریں گے کہ بھارت مظالم کو روکنے کے لئے اقدامات اٹھائیں۔انہوں نے کہاکہ عوام کا مینڈیٹ چوری کرنے والی حکومت ہر شعبے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے۔مہنگائی اور بے روزگاری سے عوام کی چیخیں نکل رہی ہے لیکن حکمران اقتدار کے نشے میں مصروف ہے اور انہیں عوامی مسائل سے کوئی سر و کار نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں عدل و انصاف کے نظام کو ٹھیک کرنے سے پچاس فیصد مسائل ہوسکتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ اگر ملک میں رائج قوانین قرآن و سنت کے مطابق کئے جائیں تو ملک ترقی کی راہ پر گامزن ہو سکتی ہے۔انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی امید کی آخری کرن ہے عوام نے اگر آئندہ انتخابات میں جماعت اسلامی کا ساتھ دیا تو اسلامی اور خوشحال پاکستان کا خواب شرمندہ تعبیر ہو سکتا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر