محمد پور‘ ہیڈ ماسٹر کی سازشیں‘ بچوں کا احتجاج‘ گروپنگ پر 2ٹیچر معطل

  محمد پور‘ ہیڈ ماسٹر کی سازشیں‘ بچوں کا احتجاج‘ گروپنگ پر 2ٹیچر معطل

  



جام پور (نمائندہ خصوصی )ڈپٹی کمشنر راجن پور کے حکم پر غیر قانونی طور پرمڈل سکول محمد پور میں تعنات ہیڈماسٹر فضل عباس کے آرڈر کیسنل ہونے کے بعدسکول میدان جنگ بن گیا۔ بچوں نے ہاتھ میں ڈنڈے اٹھاکرکے شدید احتجاج کیا۔سکول میں ہیڈماسٹر لابی کے بعض اساتذہ نے(بقیہ نمبر53صفحہ7پر)

گروپنگ کرتے ہوئے سکول میں گھنٹی بجا کرکے کلاسوں کا بائیکاٹ کر ادیا۔ کئی گھنٹے تک بچے سکول میں یرغمال بنے رہے۔ اساتذہ اور بچوں نے پلے کارڈ اٹھاکرکے ضلع وتحصیل انتظامیہ کے خلاف شدید نعرے بازی کی ۔ اکثر بچے جنگ کے ماحول کو دیکھتے ہی گھروں کو واپس چلے گئے۔ضلع انتظامیہ کو علم ہوتے ہی سی ای او تعلیم نے فوری طور پر ڈی ای او اور ڈپٹی ڈی ای او کو سکول پہنچنے کی ہدایت کر دی۔ ڈپٹی ایجوکیشن افسر نے موقع پر پہنچ کر کے حالات کنٹرول کئے۔ سکول میں سازش کرنے والے دواساتذہ معطل اورمتعدد کو شوکاز نوٹس جاری کردئیے۔ تفصیل کے مطابق گزشتہ روز ڈپٹی کمشنر راجن پور کے حکم پر غیر قانونی طور پر محمد پورسکول میں تعنات ہیڈماسٹر فضل عباس کے ارڈر منسوخ کر دیے ۔ آرڈر منسوخی پر ہیڈماسٹر فضل عباس آپے سے باہر ہو گئے۔رات گئے تک شاہ ویز ہوٹل جام پور پر سٹاف کو بلا کرکے احتجاج اور دھرنے کے پلان ترتیب دیے گئے۔ صبح اسمبلی کے وقت ہیڈماسٹر لابی کے استاد عابد شہزاد۔ مختیار حسین اور دیگر نے سکول کے بچوں کے ہاتھوں میں بینرز دے کرکے شدید احتجاج شروع کر ادیا۔ کئی گھنے تک سکول میں جنگ کا ماحول بنا رہا۔ اساتذہ نے زبردستی بچوں کو کلاس روم سے نکال کرکے کمروں کو تالے لگا دیے گئے۔ ضلع انتظامیہ اور تحصیل انتظامیہ کے خلاف نعرہ بازی ہو تی رہی۔ اساتذہ نے سکول میں گھنٹی بجاکرکے سکول کی چھٹی کرادی۔ کئی بچے سکول سے چلے گئے۔ میڈیا کے نمائندگان کی نشاندھی پر سی ای او تعلیم راجن پور نے فوری طور پرایکشن لیتے ہوئے سازش میں ملوث دو اساتذہ کومعطل کر دیا۔ اور دیگرکو شوکاز نوٹس جاری کرتے وضاحت طلب کرنے کے علاوہ ڈپٹی ڈی ای اوجام پور ملک ممتاز حسین راجپوت کو موقع پر جاکر کے حالات کو کنٹرول کرنے کا حکم دیا۔ ممتاز حسین راجپوت نے محمد پور جاکرکے تمام حالات کوکنٹرول کیا۔ احتجاج کرنے والے بچوں کے والدین سے ملاقات کرکے تمام صورت حال سے اگاہ کیا۔ سی ای او تعلیم فاروق احمد علوی نے موقف میں بتایا کہ کسی بھی سرکاری ملازم کو قانون ہاتھ میں نہیں لینے دیں گے۔انکوری رپورٹ کے بعد سکول کا ماحول خراب کرنے اور اکھاڑہ بنانے والوں اور ان کے سرپرست اعلی کے خلاف سخت ایکشن لیاجائیگا۔ دوسری طرف ہیڈماسٹر فضل عباس نے مزید لابنگ کے لیے سہہ پہر ساڑے تین بچے انڈس روڈ پر واقع ہوٹل پر سٹاف کا اجلاس بلا کرکے آج کے لیے حکمت عملی طے کر لی۔ بعض بچوں کے والدین نے سکول کے ماحول کو دیکھتے ہوئے بچوں کو دیگر سکولوں میں داخل کرنے پر سوچ بچار شروع کر دیا ہے۔ شہریوں نے سیکرٹری تعلیم پنجاب کمشنر ڈیرہ۔ ڈپٹی کمشنر راجن پور سے سخت ایکشن لینے کا مطالبہ کیاہے۔

معطل

مزید : ملتان صفحہ آخر