سلیکٹڈ حکومت کا تجربہ ناکام،جب نابینا کے حوالے گاڑی کر جائیگی تو حادثہ ہی ہوگا:مسلم لیگ ن

سلیکٹڈ حکومت کا تجربہ ناکام،جب نابینا کے حوالے گاڑی کر جائیگی تو حادثہ ہی ...

  



کراچی/اسلام آباد (این این آئی،مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ ن کے مرکزی جنرل سیکرٹری اور رکن قومی اسمبلی احسن اقبال نے کہاہے کہ سلیکٹڈ حکومت کا تجربہ ناکام ہوچکا ہے جب نابینا کے حوالے گاڑی کی جائیگی تو حادثہ ہی ہوگا، حکومتی پالیسیاں ترقی کش ہیں،سی پیک ہی نہیں پورے ملک کی ترقی رک چکی، بلند شرح سود اور روپے کی قدر میں کمی نے معیشت کو برباد کردیا، کشمیری 115روز سے محصور ہیں حکومت کی خارجہ پالیسی ناکام ہوچکی یہ حکومت ملک کو کسی بھی وقت بڑے بحران سے دوچار کرسکتی ہے،اپوزیشن اگرچہ حکومت کو گھر بھیجنے کے لیے بے صبر ہے لیکن حکومت کے اقدامات سے ظاہر ہوتا ہے کہ انہیں ہم سے زیادہ گھر جانے کی جلدی ہے۔این این آئی سے خصوصی گفتگوکرتے ہوئے احسن اقبال نے کہاکہ فارن فنڈنگ ملک کی تاریخ کا سب سے بڑا سکینڈل ہے، تحریک انصاف نے 23اکاؤنٹس سے کی جانے والی فنڈنگ چھپائی جو سٹیٹ بینک نے پکڑی اب رسیدیں دینے کی باری عمران خان کی ہے۔آرمی چیف کی مدت میں توسیع کے معاملے پر انہوں نے کہا کہ 22 کروڑ عوام کے ملک کو چلانے کے لیے صلاحیت چاہئے موجودہ حکومت نے جس طرح اس حساس معاملے پر غیرذمہ داری کا مظاہرہ کیا اس سے پوری دنیا میں پاکستان کا تماشمہ بنا آرمی چیف کی مدت میں توسیع وزیر اعظم کی صوابدید ہے لیکن اگر باجوہ صاحب کو توسیع دینا تھی تو طریقے سے دی جاتی۔ انہوں نے کہا کہ توسیع کے معاملے پر عدلیہ کا فیصلہ قابل احترام ہے اس پر اپنی قیادت اور اپوزیشن اتحادیوں سے مشاورت کے بعد ردعمل دیں گے۔ نواز شریف کی بیماری اور وطن واپسی کے بارے میں احسن اقبال نے کہا کہ نواز شریف کا دل پاکستان میں دھڑکتا ہے انہوں نے بیمار بیوی کو تنہا چھوڑا لیکن ملک اور قانون کا راستہ نہیں چھوڑا اس لیے وہ صحتیاب ہوتے ہی واپس آئیں گے۔دوسری جانب اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئیمسلم لیگ ن کی ترجمان ورکن قومی اسمبلی مریم اورنگزیب نے کہا کہ ملک پر اس وقت مافیا حکمران مسلط ہے، عمران خان کو دھمکی کا جواب دھمکی سے ملے گا، الیکشن کمیشن کا رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم نہ بیٹھتا تو آج مسلم لیگ ن کی حکومت ہوتی۔انہوں نے کہا کہ شہباز شریف پر ایک روپے کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی، 6 ماہ ہو گئے مگر ان کیخلاف کوئی ریفرنس دائر نہیں ہوا۔ شہباز شریف کا کاروبار فیملی بزنس ہے اور بزنس میں ملوث تمام افراد کو گرفتار کیا جا رہا ہے۔مریم اورنگزیب نے چیئرمین نیب سے افسران کی سرگرمیوں کا نوٹس لینے کا مطالبہ بھی کیا اور کہا کہ نیب کی ہواؤں کا رخ پھر مسلم لیگ ن کی جانب ہو گیا ہے۔مریم اور نگزیب نے کہا کہ مریم اورنگزیب نے کہاکہ پاکستان پر اس وقت مافیا مسلط ہے،ملک کی پالیمنٹ،اپوزیشن، معیشت اور میڈیا بند ہے۔ انہوں نے کہاکہ ترقی کی شرح کم اور مہنگائی میں اضافہ ہوا،دوسروں کو مافیا اور خود لوگوں کا روز گار بند کر رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ میں حکومت کی نالائقی واضح ہو گئی ہے، چاردن میں جو سمریوں میں ردوبدل ہوا وہ آپ کے مافیا نے کیا؟احتساب بیورو صرف جس کے نام کے آخر میں شریف آتا ہے اس کا احتساب کرتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ سے درخواست کرتی ہوں کہ دوسری عدالتوں اور نیب میں کیا ہو رہا ہے؟ اس معاملے کو دیکھے۔ انہوں نے کہاکہ دباؤ ڈال کر ریفرنس بنانے کی کوششیں جاری ہیں۔ انہوں نے کہاکہ شاہد خاقان عباسی، اور مفتاح اسماعیل کو اس لئے چھ ماہ سے جیل میں ڈالا گیا کیونکہ وہ لائق انسان ہیں،ایک وزیراعظم کو سزائے موت کی چکی میں ڈال دیا گیا ہے، یہ کس قسم کا قانون اور طرز حکمرانی ہے،رانا ثنا اللہ کے خلاف بھی کوئی ثبوت پیش نہیں ہوسکا، صرف زور وعدہ معاف گواہوں پر ہے،احتساب ضرور کریں مگر سیاسی انتقام نہ لیں۔انہوں نے کہاکہ نیب میڈیا کے ذریعے جھوٹ بول رہا ہے،شہباز شریف کے حوالے سے اعتراف کریں وہ بجلی لائے،چار میٹرو بنائیں، سڑکوں کا جال بچھایا جبکہ موجودہ حکمران نے کھنڈرات کے سو کچھ نہیں بنایا۔انہوں نے کہاکہ سلائی مشین سے بے نامی خرید کر بند کمرے میں ڈیل کرتے ہیں اور دوسری طرف (ن)لیگ کو احتساب کے نام پر انتقام کا نشانہ بنارہے ہیں۔

مسلم لیگ ن

مزید : صفحہ اول