پاکستانی عوام بے عقل سلیکٹڈ حکومت سے نجات چاہتے ہیں، فیصل صالح

پاکستانی عوام بے عقل سلیکٹڈ حکومت سے نجات چاہتے ہیں، فیصل صالح

  



عبدالحکیم (این این آئی) پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سابق وفاقی وزیر مخدوم فیصل صالح حیات نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت اپنی ناکامیوں کو چھپانے کیلئے اپوزیشن پارٹیوں پر الزامات لگا رہی ہے پاکستان کی 22 کروڑ عوام اس نااہل بے عقل اور سیلیکٹڈ حکومت سے نجات چاہتے ہیں ڈیڑھ سال میں ماسوائے مایوسی کے عوام کو کچھ نہ دے سکے انہوں نے کہا کہ ہمارا وزیراعظم کہ رہا ہے کہ پاکستان کے دشمنوں کی سازش کو ہم نے آج ناکام بنا دیا ہے آج انکی ملک کیخلاف سازشیں سب کے سامنے ہیں فیصل صالح حیات نے کہا کہ ہمیں حکومت کی ایسی سوچ پر تعجب اور افسوس ہے ہمیں حکمران بتائیں کہ کیا آج سے پہلے کی اسمبلیاں ملک دشمنوں سے چلائی تھی جس ادارے کی بے پناہ عزت و تکریم ہو جو ادارہ ملک میں بسنے والے تمام پاکستانیوں کی ترجمانی کرتا ہو کیا اس سے اسطرح کا سلوک کرنا چاہیے انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس آف پاکستان آصف سعید کھوسہ نے اپنے تاریخی فیصلہ میں موجودہ حکومت کی انتہائی نااہلی کو نہ صرف بے نقاب بلکہ پوری دنیا میں ان کو رسوا کردیا ہے اب یہ کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہیں رہے اور انکی ناقص کارکردگی اور حیثیت کو آئینہ کی طرح عیاں کردیا ہے چیف جسٹس صاحب نے یہاں تک کہہ دیا ہے کہ جن کو قانون بنانا نہیں آتا ان نااہلوں کی ڈگریاں چیک کیں جائیں ان نااہلوں نے پورے پاکستان کے سسٹم کو تباہ کر کے رکھ دیا ہے چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے انکی کارکردگی کو تین سال سے چھ ماہ تک محدود کردیا ہے ہم اعلیٰ عدلیہ کے فیصلوں کو سلام پیش کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ عمران نیازی نے سپریم کورٹ سے بے عزت ہونے کے باوجود ڈھٹائی کے ساتھ اپنی روایتی تقریر کو برقرار رکھا حکومت اپنے پاؤں پر خود کلہاڑی چلا رہی ہے حکومت نے ڈیڑھ سال ماسوائے اپوزیشن رہنماؤں کو پابند سلاسل اور انتقامی سیاست کے اور کچھ نہیں کیا ہر بات پر یوٹرن اور غلیظ زبان کا استعمال حکمرانوں کا وطیرہ بن چکا ہے -

فیصل صالح

مزید : صفحہ آخر