وہ حسینہ جسے مس ہٹلر کہا جاتا ہے، لیکن کیوں؟ آپ بھی جانئے

وہ حسینہ جسے مس ہٹلر کہا جاتا ہے، لیکن کیوں؟ آپ بھی جانئے
وہ حسینہ جسے مس ہٹلر کہا جاتا ہے، لیکن کیوں؟ آپ بھی جانئے

  



روم(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا میں ’مس یونیورس‘، ’مس ورلڈ‘ اور دیگر کئی طرح کے مقابلہ ہائے حسن ہوتے ہیں جن میں جیتنے والی حسینہ کو تاج پہنایا جاتا ہے مگر اٹلی میں گزشتہ دنوں ایک ایسا مقابلہ حسن کروا دیا گیا کہ پولیس نے جیتنے والی ماڈل سمیت 19افراد کو گرفتار کرکے جیل میں ڈال دیا۔ میل آن لائن کے مطابق اس مقابلے کا نام ’مس ہٹلر‘ رکھا گیا تھا جس میں درجن سے زائد ماڈلز نے شرکت کی اور 26سالہ فرانسسکا ریزی نامی حسینہ اس مقابلے میں فاتح قرار پائی۔

یہ مقابلہ پہلی بار منعقد نہیں ہوا بلکہ ہر سال اس کا انعقاد کروایا جاتا ہے لیکن چونکہ یہ اٹلی کی نیونازی اور یہودی مخالف تحریک کے لوگ منعقد کرواتے ہیں چنانچہ یہ مقابلہ خفیہ طور پر کروایا جاتا ہے اور منظرعام پر آئے تو پولیس انہیںدھر لیتی ہے۔ اس مقابلے میں شریک ہونے والی ماڈلز کے جسم پر نیونازی اور ہٹلر سے وابستہ علامات اور اسلحہ وغیرہ ٹیٹوز کے ذریعے بنا ہوتا ہے۔ فرانسسکا نے بھی اپنی پشت پر عقاب بنوا رکھا تھا جو کہ جرمنی کے نازی دور کی علامت ہے۔ پولیس نے گرفتار ہونے والے 19افراد کی نشاندہی پر ملک بھر میں 25سے زائد گھروں پر چھاپے بھی مارے جہاں سے جدید ترین اسلحہ، تلواریں اور اس تحریک اور ہٹلر سے متعلقہ لٹریچربرآمد ہوا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس