پی ڈی ایم کے کارکنوں کی پکڑ دھکڑ ، حکومت نے جلسہ روکنے کیلئے ملتان میں سب سے ضروری چیز ہی بند کر دی 

پی ڈی ایم کے کارکنوں کی پکڑ دھکڑ ، حکومت نے جلسہ روکنے کیلئے ملتان میں سب سے ...
پی ڈی ایم کے کارکنوں کی پکڑ دھکڑ ، حکومت نے جلسہ روکنے کیلئے ملتان میں سب سے ضروری چیز ہی بند کر دی 

  

ملتان (ڈیلی پاکستان آن لائن )ملتان میں پی ڈی ایم کے جلسے سے پہلے کارکنوں کی پکڑ دھکڑ جاری ہے جب کہ انتظامیہ نے کئی علاقوں میں انٹرنیٹ سروس بھی بند کردی ہے۔

نجی ٹی وی جیونیوز کے مطابق پی ڈی ایم کا جلسہ روکنے کے لیے مختلف اضلاع سے پنجاب پولیس کی اضافی نفری کو طلب کر لیا گیا ہے جب کہ کارکنوں کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کے شیل اور ربڑ کی گولیاں منگوالی گئی ہیں۔سٹیڈیم کو کارکنان سے خالی کراکے ایک بار پھر سے تالے لگا دیے ہیں جب کہ سٹیڈیم سے سیاسی رہنماو¿ں کے پینا فلیکس اور بینرز بھی اتار دیے گئے اور چوک گھنٹہ گھر کے اطراف پولیس کی بھاری نفری تعینات کر کے رکاوٹیں کھڑی کر دی گئی ہیں۔شہر میں بیشتر مقامات پر کنٹینر لگاکر سڑکوں کو بند کردیا گیا ہے جس سے عام شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

 نشتر روڈ سے گیلانی ہاو¿س جانے والا راستہ سیل کردیا گیا اور دوسرے راستے کو بھی سیل کیا جارہا ہے، راستہ بند ہونے سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔دوسری جانب شہر کے مختلف علاقوں میں موبائل فون سروس شدید متاثر ہے جب کہ کئی علاقوں میں انٹرنیٹ سروس بھی معطل کردی گئی ہے۔علاوہ ازیں سرکاری املاک کی توڑ پھوڑ، ملازمین کو زخمی کرنے اور کورونا ایس اوپیز کی خلاف ورزی پر سیاسی رہنماو¿ں کے خلاف مقدمات بھی درج کر لیے گئے ہیں۔دوسری جانب علی قاسم گیلانی، زاہد بہار ہاشمی، سعد کانجو سمیت 70 افراد حوالات کے پیچھے ہیں اور سابق وزیراعظم کے بیٹے علی قاسم گیلانی کو ایک ماہ کے لیے جیل میں بھیج دیا گیا ہے۔

مزید :

قومی -