لاہور میں فیملی سے لاکھوں روپے لوٹنے والے پولیس اہلکار نکلے، ملزمان اب تک کتنے شہریوں کو لوٹ چکے؟ آپ بھی جانیے

لاہور میں فیملی سے لاکھوں روپے لوٹنے والے پولیس اہلکار نکلے، ملزمان اب تک ...
لاہور میں فیملی سے لاکھوں روپے لوٹنے والے پولیس اہلکار نکلے، ملزمان اب تک کتنے شہریوں کو لوٹ چکے؟ آپ بھی جانیے

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) گلبرگ کے علاقہ میں کار سوار فیملی کو ہراساں کر کے سونے کی بالیاں،آئی پوڈ اورایک لاکھ روپے رقم ہتھیانے والے پولیس اہلکار نکلے۔ پولیس نے تینوں  اہلکاروں کےخلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔آئی جی پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے اہلکاروں کو نوکری سے برخواست کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق شہری عبدالاحد نے پولیس حکام کو درخواست دی کہ وہ قذافی سٹیڈیم میں اپنی فیملی کے ساتھ کھانا  کھانے نکلےتھے کہ پولیس کی وردیوں میں ملبوس تین اہلکاروں نے ان کو روک کر لوٹ لیا۔پولیس حکام نے مدعی کی نشاندہی پر تین اہلکاروں عمران،آصف اور ان کے ساتھی کو گرفتار کر لیا۔یہ اہلکار پولیس لائن سے آکر گلبرگ کے علاقے میں وردیاں پہن کر شہریوں کو ڈرادھمکا کرلوٹنے کی وارداتیں کرتے تھے۔انکوائری میں ثابت ہوا کہ ملزمان نے فیملی کو ہراساں و یرغمال بنا کرمقامی بنک کی اے ٹی ایم سے پچیس پچیس ہزار روپے چار دفعہ نکلوائے جبکہ خاتون کی بالیاں اتروا لیں اورگاڑی میں موجود آئی پوڈ بھی لوٹ کر لے گئے ۔ڈی ایس پی گلبرگ عامرعباس نے انکوائری کے بعد تینوں اہلکاروں کے خلاف ایف آئی درج کرادی،دو اہلکاروں کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے جبکہ تیسرے ملزم کی گرفتاری اب تک عمل میں نہ آسکی ہے۔ملزمان اس سے قبل بھی شہریوں سے ڈکیتی کی وارداتوں میں ملوث رہے ہیں تب انکو معطل کیا گیاتھا۔آئی جی پنجاب راؤ سردار نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے اہلکاروں کو نوکری سے برخواست کردیا ہے۔آئی جی پنجاب کا کہنا تھا کہ پنجاب پولیس میں ایسی کالی بھیڑوں کی کوئی جگہ نہیں۔صوبہ بھر میں کہیں بھی کوئی اہلکار یا افسر کسی جرم میں ملوث پایا گیا، فوری نوکری سے نکال کر سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ایسے منفی عناصر پولیس کی بدنامی کا باعث بنتے ہیں، جرائم میں ملوث اہلکاروں کو قرار واقعی سزا دی جائے گی۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -لاہور -