وفاقی کابینہ الیکشن کمیشن  کو اپنے من پسند فیصلے پر عملدرآمد کا پابند کیسے بنا سکتی ہے؟ سلیم مانڈوی والا نے سوال اٹھا دیا 

وفاقی کابینہ الیکشن کمیشن  کو اپنے من پسند فیصلے پر عملدرآمد کا پابند کیسے ...
وفاقی کابینہ الیکشن کمیشن  کو اپنے من پسند فیصلے پر عملدرآمد کا پابند کیسے بنا سکتی ہے؟ سلیم مانڈوی والا نے سوال اٹھا دیا 
سورس: File Photo

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن ) پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنماسینیٹرسلیم مانڈوی والانےسوال اٹھاتےہوئےکہاہےکہ الیکشن کمیشن اور اپوزیشن الیکٹرانک ووٹنگ مشین( ای وی ایم) سے متعلق اپنے تحفظات کا اظہار کر چکی ہے، آزاد اور شفاف انتخابات کا انعقاد الیکشن کمیشن کی آئینی ذمہ داری ہے، وفاقی کابینہ ایک آزاد اور خودمختار ادارے کو اپنے من پسند فیصلے پر عملدرآمد کا پابند کیسے بنا سکتی ہے؟۔

نجی ٹی وی کے مطابق سلیم مانڈوی والا نے کہا کہ وفاقی کابینہ نے صرف الیکٹرانک ووٹنگ مشین(ای وی ایم) کے تحت انتخابات کروانے کی شرط پر الیکشن کمیشن کو فنڈز جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے، وفاقی کابینہ کا فیصلہ ایک آزاد اور خودمختار ادارے پر دباو ڈالنے اور اختیارات میں مداخلت کے مترادف ہے، وفاقی کابینہ کا فیصلہ ایک آزاد ادارے کو برائے راست دھمکی کے مترادف ہے، وفاقی کابینہ کا فنڈز سے متعلق فیصلہ مضحکہ خیز اور انتہائی قابل مذمت ہے۔ 

انہوں نےکہاکہ پیپلزپارٹی ملک کےآزاداورخودمختارادارے الیکشن کمیشن کے ساتھ کھڑی ہے، پیپلزپارٹی الیکشن کمیشن کے اختیارات میں مداخلت اور قدغن لگانے کی کسی صورت اجازت نہیں دے گی ،وفاقی کابینہ فوری طور پر اپنا فیصلہ واپس لے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -