اپنے ہی بال نوچ کر کھانے والی لڑکی کے پیٹ میں اتنے بال جمع ہوگئے کہ معدے میں خوراک کیلئے جگہ ہی باقی نہیں رہی

اپنے ہی بال نوچ کر کھانے والی لڑکی کے پیٹ میں اتنے بال جمع ہوگئے کہ معدے میں ...
اپنے ہی بال نوچ کر کھانے والی لڑکی کے پیٹ میں اتنے بال جمع ہوگئے کہ معدے میں خوراک کیلئے جگہ ہی باقی نہیں رہی
سورس: Representational Image

  

بیجنگ (ڈیلی پاکستان آن لائن) چین میں ایک 14 سالہ لڑکی اپنے ہی بال نوچ کر کھانے کی عجیب عادت میں مبتلا ہے۔  وقت گزرنے کے ساتھ وہ اتنے بال کھا چکی ہے کہ اس کے پیٹ میں تین کلوگرام وزنی بالوں کا گچھا جمع ہو چکا ہے، کھانے کے علاوہ وہ اپنے بالوں کو نوچتی بھی رہتی ہے جس کی وجہ سے وہ لگ بھگ گنجی ہوچکی ہے۔

ساؤتھ چائنہ مارننگ پوسٹ کے مطابق لڑکی  کو کھانا کھانے میں دشواری ہو رہی تھی اور وہ بہت زیادہ کمزور ہو چکی تھی جس پر اسے ہسپتال میں داخل کرایا گیا، جہاں سرجنوں نے دو گھنٹے طویل آپریشن میں اس کے پیٹ اور آنتوں سے ایک اینٹ کے وزن جتنے بال  نکالے۔ شان ژی صوبے سے تعلق رکھنے والی یہ لڑکی پیکا نامی بیماری میں مبتلا ہے، جس میں لوگ زبردستی گندگی، کاغذ، مٹی اور دیگر غیر خوردنی اشیاء کھاتے ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس کے دادا دادی، جنہوں نے اس کی پرورش کی ہے انہوں نے   اس عارضے کو اس وقت تک محسوس نہیں کیا جب تک کہ یہ بہت سنگین نہیں ہوگیا۔

اس کے علاج کے انچارج ہسپتال کے معدے کے ماہر شی ہائی نے  ساؤتھ چائنہ مارننگ پوسٹ کو  بتایا، 'وہ ہمارے پاس اس لیے آئی کیونکہ وہ کھانا نہیں کھا سکتی تھی۔ پھر ہم نے دیکھا کہ اس کا پیٹ اتنے بالوں سے بھرا ہوا تھا کہ کھانے کے لیے مزید جگہ نہیں تھی۔ اس کی آنت بھی بند تھی۔‘‘

ایسے معاملات بھی سامنے آئے ہیں جہاں بال کھانا مہلک ثابت ہوا ہے۔ نیویارک پوسٹ  کے مطابق  2017 میں  برطانیہ میں ایک 16 سالہ طالب علم اپنے پیٹ میں موجود بالوں کے  گیند  کی وجہ سے ہونے والے انفیکشن کی وجہ سے اچانک مر گیا تھا۔ یو ایس نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ کے مطابق، جو مریض اپنے ہی بال نگلتے ہیں ان میں اکثر  میں ریپونزیل سنڈروم کی تشخیص ہوتی ہے، جو کہ ٹرائیکوفیگیا نامی نفسیاتی عارضے کی وجہ سے ہوتا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -