کوسٹا ریکا میں مگرمچھ نے 8 سالہ بچے کو والدین کے سامنے مار ڈالا

کوسٹا ریکا میں مگرمچھ نے 8 سالہ بچے کو والدین کے سامنے مار ڈالا
کوسٹا ریکا میں مگرمچھ نے 8 سالہ بچے کو والدین کے سامنے مار ڈالا
سورس: File/Pexels

  

سان جوس (ڈیلی پاکستان آن لائن)  وسطی امریکہ کے ملک کوسٹا ریکا میں ایک طالب علم کو مگر مچھ کھا گیا۔  جولیو اوٹیرو فرنانڈیز نام کا لڑکا دریائے میٹینا کا دورہ کر رہا تھا جب اسے  مگر مچھ نے پانی میں گھسیٹ لیا ۔

نیویارک پوسٹ کے مطابق لیمن شہر میں دریائے میٹینا کی گہرائی میں گھسیٹنے سے پہلے مگر مچھ  نے لڑکے کا سر کاٹ دیا۔  بچے کی بہیمانہ موت کے تقریباً ایک ماہ بعد ایک نامعلوم شکاری نے مبینہ طور پر علاقے میں ایک مگرمچھ کو گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ جب مقامی لوگوں نے اس درندے کے پیٹ کو کاٹ کر دیکھا تو اس کے اندر سے بالوں اور ہڈیوں کے ٹکڑے دریافت ہوئے جن کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ یہ جولیو کی باقیات ہیں۔

رپورٹ کے مطابق آٹھ سالہ بچہ اپنے والدین ، چار بہن بھائیوں اور دیگر رشتہ داروں کے ساتھ دریا میں مچھلی کے شکار کیلئے گیا تھا۔ جولیو گہرے پانی میں کھڑا ہوا تھا جب مگر مچھ نے اس پر اس کے والدین کی نظروں کے سامنے ہی حملہ کیا اور اسے گھسیٹتے ہوئے پانی کے اندر لے گیا۔ ایک عینی شاہد کے مطابق مگر مچھ نے حملہ اتنی تیزی کے ساتھ کیا کہ بچے کا سر جسم سے جدا ہوگیا، اس کے بعد مگر مچھ اسے اندر لے گیا، اس دوران بچے کے والدین بے بسی کے ساتھ اپنے لختِ جگر کے ٹکڑے ہوتے دیکھتے رہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -