میرے پاس کوئی ثبوت نہیں فیض آباد دھرنے میں آئی ایس آئی ملوث تھی، (ن) لیگی رہنما کا بڑا بیان

میرے پاس کوئی ثبوت نہیں فیض آباد دھرنے میں آئی ایس آئی ملوث تھی، (ن) لیگی ...
میرے پاس کوئی ثبوت نہیں فیض آباد دھرنے میں آئی ایس آئی ملوث تھی، (ن) لیگی رہنما کا بڑا بیان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما احسن اقبال نے کہا ہے کہ میرے پاس کوئی ثبوت نہیں فیض آباد دھرنے میں آئی ایس آئی ملوث تھی۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق سابق وفاقی وزیر احسن اقبال نے فیض آباد دھرنا کمیشن میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 22 نومبر 2017 کو ڈی جی فیض حمید کو مذاکرات میں شامل کرنے کا فیصلہ ہوا۔ وزیراعظم کی سربراہی میں بلائے گئے اجلاس میں عسکری قیادت بھی موجود تھی۔ حکومت سمجھتی تھی کہ معاہدے پر فوج کے اعلی افسر کے دستخط نہیں ہونے چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ تب اطلاعات تھیں کہ مسالک کی بنیاد پر انتشار بڑھنے کا خدشہ ہے،     اجلاس میں حکومت نے یہی سوچا کہ وزیر قانون کا استعفیٰ نہیں بنتا۔ اس وقت محلے کی سطح پر فسادات شروع ہونے کا خطرہ تھا۔ جب معاہدہ ہو رہا تھا تو اجلاس میں ڈی جی فیض حمید کو معاملے کو حتمی نتیجے پر لانے کا کہا۔ تمام واقعات نوازشریف کی نااہلی سے شروع ہوئے اور مسلم لیگ (ن) کو نشانہ بنایا گیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ آج کمیشن نے سوالنامہ دیا ہے جس کا جواب تیار کر کے جمع کروانا ہے۔ 

مزید :

قومی -