خاتون مایوس ہونے لگی تو یاد آیا تخلیقی صلاحیت اسکی د رخواست کو عملی شکل میں ڈھالنے کیلئے کارروائی میں مصروف ہے فکر و پریشانی کی کوئی بات نہیں 

خاتون مایوس ہونے لگی تو یاد آیا تخلیقی صلاحیت اسکی د رخواست کو عملی شکل میں ...
 خاتون مایوس ہونے لگی تو یاد آیا تخلیقی صلاحیت اسکی د رخواست کو عملی شکل میں ڈھالنے کیلئے کارروائی میں مصروف ہے فکر و پریشانی کی کوئی بات نہیں 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 مصنف: ڈاکٹر جوزف مرفی
مترجم: ریاض محمود انجم
قسط:116
اس عورت نے اپنا رویہ کیسے تبدیل کیا:
مندرجہ بالا عبارت میں جس خاتون کا ذکر کیا گیا، اس نے ایک سادہ سچ اور حقیقت کے متعلق فہم و آگاہی حاصل کر لی۔ جب آپ یہ سمجھتے ہیں کہ آپ اپنی پسند کی قسم کے مرد کو حاصل کر سکتی ہیں، تو اس کا نتیجہ آپ کے یقین اور فہم کے مطابق آپ کے سامنے ظاہر ہو جاتا ہے۔ ذیل میں ایک ایسی مخصوص دعا درج ہے جسے اس نے اپنے تحت الشعور کے منفی رویئے کو تبدیل کرنے اور اپنی پسند کے مرد ساتھی کو اپنی طرف متوجہ کرنے کیلئے استعمال کیا:
”میں اپنے ذہن میں اس مرد کا عکس تیار کر رہی ہوں جس کی میں شدید خواہشمند ہوں۔ اپنے خاوند کے طو رپر جس قسم کے مرد کو میں اپنی طرف منقث کرتی ہوں، وہ ایک مضبوط، طاقتور، محبت آمیز، مردانہ وجاہت کا نمونہ، کامیاب، ایماندار، وفادار اور قابل بھروسہ شخص ہے، اسے میرے ذریعے محبت، چاہت اور خوشی کا احساس ہوتا ہے، اس کی اطاعت ہی میں میرے لیے خوشی اور پیار پوشیدہ ہے۔
مجھے معلوم ہے کہ وہ مجھے چاہتا ہے اور میں بھی اسے چاہتی ہوں۔ میں ایک ایماندار، مخلص، محبت آمیز اور مہربان خاتون ہوں، اس کیلئے میرے پاس شاندار تحائف موجود ہیں۔ ان تحائف میں نیک خواہشات، ایک ہشاش بشاش دل او رصحت مند بدن شامل ہے۔ مجھے دینے کیلئے بھی اس کے پاس یہی کچھ ہے، یہ باہمی ہم آہنگی کا معاملہ ہے۔ میں اسے کچھ دیتی ہوں اور اس سے کچھ لیتی ہوں۔ روحانی، الہوی اور مقدس تخلیقی صلاحیت و قوت کو علم ہے کہ یہ مرد کہاں ہے، اور میرے تحت الشعور کی گہری فہم و فراست اور دانش، ہم دونوں کو اپنے مخصول طریقے کے ذریعے، یکجاکررہی ہے اور فوری طور پر ہم دونوں ایک دوسرے کوپہچان لیتے ہیں۔ میں اپنی اس درخواست کو اپنے تحت الشعو رکے حوالے کرتی ہوں جسے یہ علم ہے کہ میری درخواست کو عملی شکل کیسی عطا کرنی ہے۔ میں اپنے تحت الشعور کی طرف سے صحیح اور مناسب جواب کیلئے اس کا شکریہ اداکرتی ہوں۔“
اس خاتون نے رات اور دن، مندرجہ بالا طریقے کے مطابق دعامانگی اور اس کے ساتھ ساتھ اسے ان سچائیوں کے متعلق بھی یقین تھا اور یہ بھی علم تھا کہ اپنے ذہن میں اس قسم کی دعا کا نقش مسلسل اور متواتر بٹھانے اور مثبت کرنے کے ذریعے وہ اپنے ذہنی تصور اور تخیل کے مطابق اپنی مطلوبہ خواہش کی تکمیل میں کامیاب ہ وجائے گی۔
ایک عورت کی دعا کیسے قبول ہوئی:
کئی ماہ گزر گئے اور مختلف مردوں کے ساتھ کئی ملاقاتوں اور معاشرتی میل جول کے باوجود کوئی بھی مرد اسے پسند نہ آ سکا۔ اس معاملے میں جب یہ خاتون مایوس ہونے لگی تھی تو اسے یاد آیا کہ اس میں موجود تخلیقی صلاحیت اپنے طور پر اس کی د رخواست کو عملی شکل میں ڈھالنے کیلئے اپنی کارروائی میں مصروف ہے لہٰذا فکر و پریشانی کی کوئی بات نہیں ہے۔ پھریہ ہوا کہ طلاق کی کارروائی کے ضمن میں حتمی اور آخری فیصلہ سنا دیا گیا جس کے ذریعے اسے بہت ہی زیادہ طمانیت اور ذہنی سکون میسر ہوا۔(جاری ہے) 
نوٹ: یہ کتاب ”بُک ہوم“ نے شائع کی ہے۔ ادارے کا مصنف کی آراء سے متفق ہونا ضروری نہیں۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں)

مزید :

ادب وثقافت -