مضرصحت خوراک سے ہر سال22لاکھ افراد ہلاک ہوجاتے ہیں: ماہرین

مضرصحت خوراک سے ہر سال22لاکھ افراد ہلاک ہوجاتے ہیں: ماہرین

  

لاہور(کامرس رپورٹر)سمال اینڈ میڈیم انٹر پرائزز ڈویلپمنٹ اتھارٹی ’سمیڈا‘ کے زیر اہتمام گزشتہ روزلاہور چیمبر آف کامر س اینڈ انڈسٹری کے اشتراک سے فو ڈ سکیورٹی کے موضو ع پر منعقدہ ایک ورکشاپ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ دنیا میں ہر سال مضر صحت خوراک کی وجہ سے582 ملین سے زائد لوگ مہلک بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں جن میں سے تقریباََ2.2 ملین کے لگ بھگ افراد لقمہءِ اجل بن جاتے ہیں۔ لاہور چیمبر میں منعقدہ اس ایک روزہ ورکشاپ کی اختتامی نشست سے لاہور چیمبر کے صدر شیخ محمد ارشد نے مہمان خصوصی کے طور پر جبکہ سمیڈا پنجاب کے پراونشل چیف حسنین جاوید نے اعزازی مہمان کے طو ر پر شرکت کی۔ مذکورہ ورکشاپ میں پنجاب بھر سے بیکریوں، فاسٹ فوڈ ریستورانوں، ہوٹلوں ، جوس کمپنیوں اور فوڈ پراسیسنگ کے کل 65 نمائید ے شریک تھے ۔ اس موقع پر لاہور چیمبر کے نائب صدر ناصر سعید، پنجاب فوڈ اتھارٹی کے ڈپٹی ڈائریکٹر ثاقب منیر اور سمیڈاپنجاب کے پراونشل چیف راجہ حسنین جاوید کے علاوہ معروف فوڈ ٹیکنالوجیسٹ ڈاکٹر محمد جہانگیر نے بطور ٹرینیر خطاب کیا۔لاہور چیمبر کے صدر شیخ محمد ارشد نے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ غیر محفوظ خوراک کینسر اور یرقان جیسی موزی امراض کا سبب بن رہی ہے۔ لہٰذا فوڈ کے کاروبار سے وابستہ سرمایہ کاروں سے اپیل کی کہ وہ فوڈ بزنس کو محفوظ بنانے کیلئے حکومت کے مقررہ معیاروں پر عملدرآمد کو یقنی بنائیں۔

انہوں نے اس اہم موضوع پر کاروباری افراد کیلئے تربیتی پروگرام کے اہتمام پر سمیڈا کا شکریہ اد ا کیا اور شرکاء کو یقین دہانی کرائی کہ لاہور چیمبر سمیڈا جیسے اداروں کے ساتھ ملکر ایسے مزید پروگراموں کاانعقاد ممکن بنائے گا۔سمیڈا پنجاب کے صوبائی چیف راجہ حسنین جاوید نے اختتامی کلمات میں پروگرام کے انعقاد میں لاہور چیمبر کا شکریہ ادا کیا اور یقین دہانی کرائی کہ اس نوع کے پروگرام پنجاب کے دیگر شہروں میں بھی منعقد کئے جائیں گے۔ٖممتاز فوڈ ٹیکنالوجسٹ اور گورنمنٹ کالج کے شعبہ کیمسٹری کے استاد ڈاکٹر محمد جہانگیر نے شرکاء کو فوڈ سیکیورٹی کے مقامی اور عالمی معیاروں کے بارے میں سیر حاصل پریزنٹیشن دی اور انہیں فوڈ سیکیورٹی مینجمنٹ سے متعلق ترقی یافتہ ملکوں میں رائج طریقہ ہائے کار کے بارے میں آگاہ کیا۔دریں اثناء فوڈ سیفٹی کی اہمیت اور اس بارے میں ٹرینننگ پروگرام کی ضرورت پر تبصرہ کرتے ہوئے سمیڈا کے چیف ایگزیکٹو آفیسر محمد عالمگیر چوہدری نے اپنے بیا ن میں بتا یا ہے کہ پنجاب حکومت نے صوبہ میں محفوظ اور صحت افزاء خوراک کی فروخت کو یقینی بنانے کیلئے مقررہ معیاروں کے نفاذ کا عمل شروع کر رکھا ہے جو ایک خوش آئیند اقدام ہے اور اس اقدام کے بعد پنجاب فوڈ اتھارٹی صوبہ میں مضر صحت خوراک کی روک تھام کیلئے سختی سے سرگرم عمل ہے۔ اس صورتحال میں فوڈ بزنس سے وابستہ کاروباری افراد کو ، خوراک جراثیموں سے محفوظ رکھنے کیلئے رائج مقامی و عالمی طریقوں اور معیارات کے بارے میں مکمل آگاہی دینے کی اشد ضرورت تھی اور اس ضرورت کو پورا کرنے کیلئے سمیڈا اپنے طور پر آگے بڑھا ہے اور اس مقصد کیلئے لاہور چیمبر جیسے نمائیدہ کاروباری اداروں کے ساتھ ملکر تربیتی پروگراموں کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے۔

مزید :

کامرس -