ایرانی سلامتی کونسل کے سیکرٹری کا مفید دورہ!

ایرانی سلامتی کونسل کے سیکرٹری کا مفید دورہ!

  

ایران کی سپریم نیشنل سیکیورٹی کونسل کے سیکرٹری ریئر ایڈمرل علی شامخانی کا دو روزہ دورہ پاکستان مفید رہا کہ انہوں نے یہاں پاکستان کی قومی سلامتی کے نئے مشیر لیفٹیننٹ جنرل(ر) ناصر جنجوعہ کے علاوہ مشیر برائے امور خارجہ سرتاج عزیز سے ملاقات کی اور طویل مذاکرات کئے ان میں افغانستان کی صورت حال،مشرق وسطیٰ میں شام، یمن اور عراق کے حوالے سے داعش کی سرگرمیوں اور تنازعہ کشمیر پر بھی بات ہوئی۔ مشیر امور خارجہ سرتاج عزیز کے مطابق پاکستان کی طرف سے افغان امور کو سلجھانے کے لئے ایران کی خدمات کا خیر مقدم کیا گیا اور کہا گیا ہے کہ ایران کی طرف سے حالات کو معمول پر لانے کے لئے کوشش کا خیر مقدم کیا جائے گا اور اب یہ افغان حکومت پر منحصر ہے کہ وہ کس ردعمل کا اظہار کرتی ہے۔ ایرانی رہنما سے ہونے والی ملاقاتوں اور مذاکرات کے ذریعے اس امر پر اتفاق پایا گیا کہ داعش کی دہشت گردی سمیت ہر نوع کی دہشت گردی کی مخالفت کی جائے گی۔خوش آئندہ بات یہ ہے کہ ایران سے پابندیاں اٹھنے والی ہیں اور اسلام آباد میں دونوں ممالک کے ان رہنماؤں کے درمیان بہت سے امور میں تعاون طے پا گیا ہے۔ اس سے پہلے ایرانی گیس پائپ لائن کا معاملہ بھی حل ہو چکا اور یوں پاک ایران خوشگوار تعلقات کا ایک نیا دور شروع ہونے والا ہے، اس سلسلے میں مزید خوشی کی بات یہ ہے کہ تنازعہ کشمیر کے بارے میں ایرانی رہنما نے بہت واضح موقف اختیار کیا اور کہا کہ یہ تنازعہ سیاسی طور پر کشمیریوں کی مرضی اور رائے کے مطابق طے ہونا چاہئے۔ ایران کی سلامتی کونسل کے سیکرٹری کا یہ دورہ انتہائی اہم رہا اور مفید مذاکرات ہوئے، جس سے تعلقات میں بہتری آئے گی اس سے قبل تو یہی تصور پایا جاتا ہے کہ ایران بعض امور میں ہمارے ہمسایہ بھارت کے زیادہ قریب ہے۔

مزید :

اداریہ -