پولیس اور بااثر افراد کی سرپرستی میں 53اڈوں کا انکشاف

پولیس اور بااثر افراد کی سرپرستی میں 53اڈوں کا انکشاف

  

 لا ہور (ر پو رٹ :شعیب بھٹی )صوبائی دالالحکو مت میں پولیس افسران اور سیاسی شخصیات کی سر پرستی میں بڑے پیمانے پر قما ر با زی کا کاروبار عر وج پر ہو رہا ہے۔ ذرا ئع کی طر ف سے ملنے والی رپورٹ میں نہ صرف 53 بڑے اڈوں کی نشاندہی کی گئی ہے اور محل وقوع بھی بتایا گیا ہے بلکہ یہ معلومات بھی پہنچائی گئی ہیں کہ سماج دشمنی کے یہ اڈے کن لوگوں، عناصر اور اداروں کی زیرنگرانی یا سرپرستی میں اپنا گھناؤنا کاروبار چلا رہے ہیں۔ اس سلسلے میں یہ بھی پتہ چلا ہے کہ ان اڈوں کے سرپرستوں میں پو لیس سمیت با اثر سیا سی شخصیا ت بھی شامل ہیں۔ لاہور کے معروف علاقوں کی مشہور مارکیٹوں، منڈیوں اور بازاروں کے علاوہ وہاں کے لوگوں کے نام بھی دیئے گئے ہیں اور ان لوگوں کے دیگر لوگوں سے رشتے اور تعلقات بھی بیان کئے گئے ہیں۔ ان کی سیاسی اور نظریاتی وابستگی بھی ظاہر کی گئی ہے مثال کے طور پر بتایا گیا ہے کہ شاہد برکت مارکیٹ گارڈن ٹاؤن کے قریب ایک جواخانہ ایک سابق ایس ایس پی (انویسٹی گیشن) لاہور کیپٹل سٹی پولیس کی مدد سے چلا رہے ہیں جب کہ اس علاقے کے مقامی پولیس ایس ایچ او بھی ان کی حفاظت کرتے ہیں۔رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ’’وقار بسم اللہ چوک زینت بلاک علامہ اقبال ٹاؤن میں ایک قمار بازی کا اڈہ چلاتے ہیں اور انہیں پولیس آفیسر کی مدد حاصل ہے جبکہ شاہد شام نگر چوبرجی میں ایک جوئے کا اڈہ چلا رہا ہے جس کی سرپرستی اس کا بھائی کرتاہے جو کہ ایک سیا سی پا رٹی کے کا ر کن ہیں ۔رپورٹ میں مز ید بیا یا گیا ہے کہ شاہد منشیات کے کاروبار میں بھی ملوث ہے اور متعدد مرتبہ جیل بھی جا چکاہے مگر ہر مرتبہ اپنے بھائی کی ماہرانہ قانونی مدد سے جیل سے رہائی پانے میں کامیاب ہوا۔ اسی طر ح اچھر ہ کا گو شی جو علاقہ میں بہت بڑاپر چی جو اکروا تا ہے ۔ذرائع کایہ بھی کہنا ہے کہ متعلقہ تھانوں کو پتہ ہو نے کے باوجود کو ئی کارروائی نہیں کی جاتی ۔تاحال اعلیٰ پولیس افسران کو گمر اہ کر نے کے لئے سب اچھا کی رپورٹ بھجوائی جاتی ہے ۔ذرائع کا مزید کہنا ہے ۔کہ اگر کو ئی اسی جگہ پر ریڈ کر ے تو ان کے متعلقہ تھانوں کے اہلکار فو ن کر کے پہلے ہی انہیں اطلا ع دے دیتے ہیں۔پولیس ذرائع کے مطابق خفیہ انفارمشین سے حاصل ہو نے والی معلومات کے بعد ان بکیوں کے خلاف گرینڈ آپریشن کی تیاری کی جارہی ہے ۔اور جلد ہی کارروائی کا سلسلہ بھی شروع کر دیا جائے گا ۔

مزید :

علاقائی -