کارکنوں کے قاتل نہ پکڑنے پر آئی جی آفس کا گھیراؤ کرینگے ، عمران خان

کارکنوں کے قاتل نہ پکڑنے پر آئی جی آفس کا گھیراؤ کرینگے ، عمران خان

  

 لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہاہے کہ ن لیگ پنجاب کی ایم کیو ایم بن چکی ہے۔ جس طرح لاہور میں ان کے کارکنوں نے پی ٹی آئی کے نہتے کارکنوں کوگولیاں ماریں اور پولیس نے ان کا ساتھ دیا اس سے ثابت ہوگیا ہے کہ ن لیگ بلدیاتی انتخابات میں پولیس کو ساتھ ملا کرجیتنا چاہتی ہے۔انہوں نے خبردار کیا کہ اگرکارکنوں کے قاتل گرفتار نہ کئے گئے تو آئی جی پولیس اور ڈی سی او دفاتر کا گھیراو کیا جائے گا۔پی ٹی آئی سیکریٹریٹ میں اجلاس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کاکہناتھاکہ کوئی حکومت ساری زندگی نہیں رہتی ، ضروری نہیں کہ ہروقت ان کی باری ہو، یہاں بھی باری انشائاللہ ضرورآئے گی ، پولیس والے غنڈوں کیساتھ مل کر جو کچھ کررہے ہیں ، ہرجگہ سے شکایات ہیں ، انشاء اللہ موقع ملاتو احتساب ہوگا۔اْنہوں نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن میں انتشار کا خدشہ ہے لہٰذاالیکشن کمیشن حساس پولنگ سٹیشنوں پر فوج اور رینجرز تعینات کرے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت کانام ہی احتساب اور شفافیت ہے لیکن مسلم لیگ ن شفافیت پر یقین نہیں رکھتی ، این اے 122میں بڑی تکنیک کیساتھ دھاندلی کی ، علیم خان اور چوہدری سرورایک ایک ووٹ پر کام کررہے ہیں اور مکمل تحقیقات کیساتھ رپورٹ سامنے لائیں گے ، پنجاب میں تھانیدار براہ راست سیاستدانوں سے احکامات لیتے ہیں ، یہی حال سندھ میں ہے لیکن پنجاب کے عوام بے فکر ہوجائیں ، چیلنج کرتاہوں کہ کوئی سیاسی مخالف انتقامی کارروائیوں کا الزام نہیں لگائے گا، سروے اٹھا کر دیکھ لیں ،خیبرپختونخوا میں پہلی بارہی حکومت ملی ہے اور کارکردگی میں نمبرون صوبہ ہے ،سیاسی جماعتوں میں بھی پی ٹی آئی ن لیگ سے آگئے ہے۔عمران خان کاکہناتھاکہ یہ لوگ اقتدار میں آتے ہیں اور پیسے کماکر باہر چلے جاتے ہیں ، چوہدری شیر علی نے کہاکہ پنجاب کاوزیرقانون ہی 17لوگوں کا قاتل ہے جبکہ پی ٹی آئی کے کارکن حق نوازکو فیصل آباد میں عوام کے سامنے گولیاں ماری گئیں لیکن انصاف نہیں ملا۔ اْنہوں نے کہاکہ جمہوریت کا نام ہی احتساب ہے ، اے این پی کے رہنماء کو پکڑاگیاتوانہوں نے انتقام قراردیا، ایک سیاسی مخالف بھی نہیں کہے گاکہ غلط مقدمہ درج ہوا، کسی صوبے میں ایسانہیں ہوتا۔ پہلی دفعہ باری آئی اور ایک نمبر کارکردگی ہے ، سروے پڑھ لیں ، پولیس ، بیوروکریسی کوغیر سیاسی کردیااورمیرٹ لارہے ہیں لیکن پنجاب کے عوام بے فکر ہوں ،یہاں بھی پولیس غیرسیاسی کریں گے لیکن موجودہ حکمران نہیں کرسکتے کیونکہ انہی پولیس اہلکاروں کے ذریعے تو الیکشن جیتتے ہیں ، آئی جی کا بھائی دیپالپور میں جیتاہے ، پولیس کو دیکھ کر کس نے مخالفت کرنی ہے ۔

مزید :

صفحہ اول -