وزیراعظم توہین عدالت کیس ،عدا لتی احکامات پر عملدرآمد نہ کرنے پر سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو نوٹس

وزیراعظم توہین عدالت کیس ،عدا لتی احکامات پر عملدرآمد نہ کرنے پر سیکرٹری ...

  

اسلام آباد(آن لائن)سپریم کورٹ نے وزیراعظم میاں نواز شریف توہین عدالت کیس میں 1998ء میں عدالت کے جاری کردہ احکامات پر عملدرآمد نہ کرنے پر سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو توہین عدالت کے نوٹسز جاری کرتے ہوئے ان سے دس نومبر تک جواب طلب کیا ہے ۔چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ سپریم کورٹ نے 1998ء میں دو آرڈرز جاری کئے تھے 17سال گزرنے کے باوجود بھی ان پر عملدرآمد کیوں نہیں ہوا اتنی بار سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ڈویژن سے جواب بھی مانگ چکے ہیں مگر تاحال عدالتی حکم پر عملدرآمد ہوتا نظر نہیں آرہا ۔ انہوں نے یہ ریمارکس جمعرات کے روز حمید قریشی وغیرہ کی درخواست کی سماعت کے دوران دیئے ہیں جن کیلئے عدالت نے ترقی دینے کے احکامات جاری تھے ۔ چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی اس دوران عدالت کو بتایا گیا کہ عدالتی حکم پر تاحال عمل نہیں ہوسکا ہے وزیراعظم باہر دورے پر تھے دیگر مصروفیات کی وجہ سے سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ڈویژن بھی اس کو مکمل نہیں کرسکے ہیں اس پر مزید ٹائم دے دیا جائے ۔ اس پر عدالت نے کہا کہ اس پر وقت نہیں دینگے بعد ازاں عدالت نے سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو توہین عدالت کے نوٹسز جاری کرتے ہوئے ان سے جواب طلب کیا ہے اور سماعت دس نومبر تک ملتوی کردی ہے

مزید :

صفحہ اول -