ایل ڈی اے کا ون ونڈو سیل بھی پراپرٹی مافیا کے ہتھکنڈوں کی نظرہونے کاانکشاف

ایل ڈی اے کا ون ونڈو سیل بھی پراپرٹی مافیا کے ہتھکنڈوں کی نظرہونے کاانکشاف

  

لاہور(اقبال بھٹی )لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی طرف سے پلاٹوں کی خریدو فروخت میں جعل سازی بوگس فائلوں کی تیاری کو روکنے سمیت دیگر اہم معاملات میں شہریوں کے مسائل کے حل کے لئے قائم کردہ ون ونڈو سیل بھی پراپرٹی مافیا کے جعلی ہتھکنڈوں کی نظر ہوگیا مافیا نے ریکارڈ کیپر اور کلرکوں کی ملی بھگت سے جعلی فائلوں پر لگے پلاٹس بیچنے کا مکرو دھندہ شروع کردیا ہے تفصیلات کے مطابق لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا 2009میں کروڑوں روپے سے تیا ر کردہ ون ونڈو سیل عوام کو ریلیف دینے میں بوری طرح ناکام ہو گیا ہے اور ون ونڈو پر بھی لینڈ مافیا کا قبضہ ہو گیا ہے اور عام شہر ی متاثر ہو رہے ہیں ان کا کام کئی کئی مہینوں تک نہیں ہوپاتا ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ لینڈ مافیا نے اپنے پلاٹوں کی فائلیں ریکارڈ میں نہ رکھوائی ہیں اور ان کے پاس ہیں وہ جب کسی پلاٹ کا سودا کسی بھی خریدار سے کرتے ہیں تو ان کی کوشش ہوتی ہے کہ خریدار مارکیٹ کا نہ ہو اور جلدی میں ہو اس نے گھر بنانا ہو اس کے بعد ایل ڈی اے کے کلرک سے رابطہ کرتے ہیں اور ان کو بھاری معاوضہ کے عوض فائل کو ریکارڈ میں رکھواتے ہیں ایل اے سی کی رپورٹ اور ڈبل ایگزیمشن کی رپورٹ اور ساتھ ہی این او سی سمیت سارے کام ریکارڈ کیپر کے ذمے لگاتے ہیں اور ریکارڈ کیپر کو یہ بھی یقین دلاتے ہیں کہ جب پلاٹ ٹرانسفر ہو جائے گا تو فائل آپ سے واپس لے لی جائے گی ڈی اے والے اس کا مکان فوراً گرا دیتے ہیں اور اسے کہا جاتا ہے کہ تم نے تو بوگس فائل سے پلاٹ خریدا ہے جبکہ لینڈ مافیا کو کوئی پوچھنے والا نہیں ۔ اس حوالہ سے جب ڈپٹی ڈائریکڑ ون ونڈو سیل سے بات کی گئی تو ان کا کہنا تھا کہ اس بارے میں ہمیں بھی اطلاعات مل رہی ہیں اور جوہر ٹاؤن کی پراپرٹی فائل اپنے پاس رکھنے کی پاداش میں چار ملازمین کو نوکری سے برخاست کیا گیا ہے اور ہم مزید بھی اس حوالہ سے تحقیقات کر رہے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -