3دن کیلئے دفعہ 144نافذ،ہرقسم کے اسلحہ کی نمائش پر پابندی

3دن کیلئے دفعہ 144نافذ،ہرقسم کے اسلحہ کی نمائش پر پابندی

  

لا ہور (کرا ئم سیل ) سی سی پی اولاہور کیپٹن (ر)محمد امین وینس نے کہا ہے کہ شہر میں دفعہ 144کا نفاذہو چکا ہے اور کو ئی بھی شہری اگلے تین دن کے لیے کسی بھی قسم کا لائسینسی سمیت کسی بھی قسم کا اسلحہ لے کر نہ چل سکتا ہے اور نہ ہی اس کی نمائش کر سکتا ہے۔حکومت کی طرف سے واضح احکامات آئے ہیں کہ الیکشن ڈے پر اسلحہ کی نمائش اور ہوائی فائرنگ بالکل برداشت نہیں کی جائے گی اور جس کسی نے قانون ہاتھ میں لینے کی کوشش کی پولیس اس کے خلاف بلا امتیاز کارروائی عمل میں لائے گی ۔لاہور کے تمام افسران کو ہدایت جاری کر دی گئی ہے کہ شہر کی اہم شاہراؤں پر موبائل ناکے لگا کر ہر شہری کی فردًا فردًا گاڑی اور موٹر سائیکل کی چیکنگ کی جائے اور اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ کوئی شہر اسلحہ لہراتے اسلحہ ساتھ لے کر چلتے ہوئے یا ہوائی فائرنگ کرتے پایا گیا تو اسے 3سال قید اور جرمانہ بھی ہو سکتا ہے ۔QRFکے جوا ن ہر پولنگ اسٹیشن کے ادرگرد گشت کریں گے ۔الیکشن کمیشن اور ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مکمل کوارڈینشن کے ساتھ چل کر الیکشن ڈے کو کامیاب بنایا جاسکتا ہے ۔پاک فوج کے دستے بھی پولیس اہلکاروں کے ساتھ بلدیاتی انتخابات کو پر امن بنانے کے لئے فرائض سر انجام دیں گے ۔حساس پولنگ اسٹیشنز پر زیادہ نفری لگائی جارہی ہے تاکہ کسی قسم کے ناخوشگوار واقعہ سے بچا جاسکے ۔ان خیا لات کا اظہار انہوں نے شزشتہ روزپولیس لائنز قلعہ گجر سنگھ میں بلدیاتی انتخابات کے حوالہ سے تمام پولیس ا فسران ،ضلعی انتظامیہ اور الیکشن کمیشن آف پاکستان کے مشتر کہ اجلاس کے دوران کیا ۔اس موقع پر کمشنر لاہور عبداللہ خان سنبل،ڈ ی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف، ڈی سی او لاہور کیپٹن (ر)محمد عثمان ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفیسر طاہر منصور ،ا یس ایس پی وی وی آئی سکیورٹی اطہر اسماعیل ،تمام ڈویژنل ایس پیز اورایس ایس پی سی آئی اے عمر ورک بھی موجو دتھے ۔اس موقع پر ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف نے کہا کہ لاہور پولیس نے بلدیاتی انتخابات کا جامع سکیورٹی پلا ن ترتیب دیا جس کے مطابق لاہور کو 12زونز میں تقسیم کیا گیا ہے اور ہر ڈویژن کا انچارج ایک ایس پی ہو گا ۔پرزائیڈنگ آفیسر کو کسی پرائیویٹ گاڑی لے جانے کی اجازت نہیں ہوگی اور جس گاڑی یا بس میں اہلکاروں کی ڈیوٹی لگے گی وہ اس میں سوار ہو کر پولنگ اسٹیشن تک جائیں گے۔جس گاڑی میں الیکشن ڈے کا میٹریل آئے اس گاڑی کو سخت سکیورٹی میں لے کر آیا جائے گا ۔الیکشن کے سامان کی حفاظت کے لئے اضافی نفری لگا دی گئی ہے ۔پولنگ ڈے پر تمام افسران اس بات کو یقینی بنائیں کہ جیسے شہری ووٹ کاسٹ کرنے کے لئے آئیں ان کو ایک قطار میں ترتیب سے ووٹ ڈلوا کر فوری طور پر واپس جانے کا کہا جائے تاکہ کسی قسم کا ہجوم یا ناخوشگوار واقعہ پیش نہ آسکے ۔میڈیا کے وہی نمائندے پولنگ اسٹیشن کے اند د داخل ہوں گے جن کے پاس الیکشن کمیشن کااجازت نامہ ہوگا ۔

مزید :

علاقائی -