سینٹ قائمہ کمیٹی کا پی ٹی سی ایل پنشنز شے متعلق فیصلے پر عملدر آمد نہ ہونے پر اظہار برہمی

سینٹ قائمہ کمیٹی کا پی ٹی سی ایل پنشنز شے متعلق فیصلے پر عملدر آمد نہ ہونے پر ...

  

اسلام آباد(آن لائن)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی نے پی ٹی سی ایل کے پنشنرز کے معاملہ پر کمیٹی اور سپریم کورٹ کے فیصلے پر عمل درآمد نہ کر نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے اسے پارلیمانی کمیٹی کے فیصلے کی توہین قرار دیا اور کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پر عمل درآمد نہ کر کے توہین عدالت بھی کی گئی ہے۔چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ 40ہزارپمشنترز میں سے13ہزاربیوائیں بھی شامل ہیں۔ حکومت کسان پیکیج کی طرح ان پنشنرز کو بھی 8فیصد اضافہ کے ساتھ20فیصد اضافہ بھی 13ارب سے55ارب کی رقم بھی اداکی جاسکتی ہے۔کمیٹی اجلاس میں سینیٹر تاج آفریدی نے USFفنڈز سے موبائل کمپنیوں کے نیٹ ورک کو بڑھانے کا معاملہ اٹھاتے ہوئے کہ فاٹا میں امن و امان کا مسئلہ بہانہ کی حد تک ہے ،دفاتر موجود ہیں آبادیاں ہیں اور جدید ٹیکناالوجی کی ضرورت بھی ہے۔سینیٹر تاج آفریدی نے انکشاف کیا کہ ایک بڑی بین الا قوامی کپمنی فاٹا مین فون کی جدید سہولیات فراہم کرنا چاہتی تھی جو سرکاری اداروں کے رویوں کی وجہ سے کام بند کر گئی ہے۔سینیٹر تاج آفریدی نے تجویز دی کہ بلوچستان کے دور دراز اضلاع کی طرح فاٹا میں بھی فون کی جدید سہولیات کیفراہمی میں رکاوٹوں کو وزارت اور پی ٹی اے مل کر ختم کریں۔سینیٹر رحمان ملک کی طرف سے گرے ٹریفک کے مسئلے کا معاملہ اٹھایا اور کہا کہ ملکی سیکورٹی کو مدنظر رکھتے ہوئے سیٹلائیٹ سے بھی مدد لی جائے۔کمیٹی اجلاس میں چیئرمین سینیٹ کو بھجوائی گئی عوامی عرضداشتوں کے علاوہ پی ٹی سی ایل پمنشنروں ،ٹی آئی پی ہری پور کے تین سکولوں اور ہسپتالون کے 122عارضی ملازمین موبائل کارڈ کی خرید و فروخت اور استعمال پر کی طرف سے کاٹے جانے والے ٹیکسوں کے ایجنڈے پر بحث ہوئی۔وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی انوشہ رحمان نے آگاہ کیا کہ USFکے ذریعے باجوڑ مہمند، خیبر، وزیرستان وغیرہ میں موبائل کمپنیوں کو سہولیات فراہمی کی اجازت دی جا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ موبائل کارڈ میں سے کی جانے والی کٹوتیوں کے بارے مین قائمہ کمیٹی سینیٹ کی دی جانے والی ہدایات کی روشنی میں وزارت ،پی ٹی اے ، ایف بی آرکے اجلاس منعقد ہو چکے ہیں۔ ودہولڈنگ ٹیکس میں کاٹی جانے والی صارفین کی رقوم کا حکومت اور رعوام دونوں کو پتہ ہونا چاہئے۔ 12کروڑ فون استعمال کرنے والوں میں سے 10لاکھ ٹیکس فائلر اورود ہولڈنگ ٹیکس کے بارے میں عوام میں بھی آگاہی کی اشد ضرورت ہے اور موبائل کمپنیوں کو بھی پتہ ہونا چاہئے کہ ود ہولڈنگ ٹیکس کے ایک ایک پیسے کا کسی بھی وقت حساب دینا ہو گا۔

اظہار برہمی

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -