مقبوضہ کشمیر جھڑپ میں میجر سمیت 4 بھارتی فوجی ہلاک , لشکر طیبہ کا کمانڈرشہید کرنے کا دعویٰ

مقبوضہ کشمیر جھڑپ میں میجر سمیت 4 بھارتی فوجی ہلاک , لشکر طیبہ کا کمانڈرشہید ...
مقبوضہ کشمیر جھڑپ میں میجر سمیت 4 بھارتی فوجی ہلاک , لشکر طیبہ کا کمانڈرشہید کرنے کا دعویٰ

  

سری نگر (صباح نیوز، آئی این پی) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز نے لشکر طیبہ کے اہم ترین کمانڈر ابو قاسم کو شہید کونے کا دعویٰ کیا ہے ، جبکہ کشمیری مجاہدین کے ساتھ جھڑپ میں میجر سمیت 4 بھارتی فوجی ہلاک اور پولیس افسر سمیت 6 اہلکار زخمی ہو گئے۔ پلوامہ اور شوپیاں قصبے میں دو مجاہد کمانڈروں کی یاد میں ہڑتال اور مظاہروں سے کاروبار زندگی معطل ہو کر رہ گیا۔ اس دوران ضلعی ہیڈ کوارٹر میں مظاہرین اور فورسز کے مابین پ±ر تشدد جھڑپیں ہوئیں۔ تفصیلات کے مطابق جنوبی کشمیر کے قصبے کلگام میں گزشتہ تین روز سے بھارتی فوج کا آپریشن جاری ہے۔ فوجی حکام کے مطابق جھڑپ جمعرات کی صبح جنوبی کشمیر کے علاقے کلگام میں ہوئی ، جس میں لشکر طیبہ کا کمانڈر ابو قاسم فورسز کی فائرنگ کا نشانہ بنا۔ بھارتی فوج کے ساتھ مجاہدین کا تصادم بدھ کی رات شروع ہوا تھا، جو جمعرات کی صبح تک جاری رہا۔ مقبوضہ وادی کشمیر کے انسپکٹر جنرل آف پولیس جاوید مجتبیٰ گیلانی نے میڈیا سے بات چیت میں اس واقعہ کی تصدیق کی اور کہا کہ پولیس کے لیے یہ ایک بڑی کامیابی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ابو قاسم انتہائی مطلوب کمانڈر اور وادی میں گزشتہ پانچ برس سے فعال تھے ، اس دوران لشکر طیبہ نے جو بھی کارروائیاں کیں وہ انہی کی قیادت میں ہوئیں، اس سے ان کو بڑا نقصان پہنچا ہے۔ اطلاعات کے مطابق فوج اور عسکریت پسندوں کے درمیان بدھ کی رات سے شروع ہونے والی جھڑپیں آخری اطلاعات تک جاری تھیں، جبکہ فوجی آپریشن بھی جاری تھا، جس میں فوج کو ہیلی کاپٹروں کی مدد بھی حاصل ہے ، جو کہ بوٹھو جنگل کی فضائی نگرانی کررہے ہیں۔ 14 آر آر اور 7پیرا سے وابستہ کمانڈوز اور پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ نے تین روز سے بانڈی پورہ کے ستھرو، کوٹا ستھرو، سملر، ارن، کڈارہ، چونٹی واری، بوٹھو اور ملحقہ علاقہ جات کے وسیع علاقے کی تلاشی کارروائی بڑے پیمانے پر جاری رکھی ہوئی ہے۔ اس دوران ایک جھڑپ میں بھارتی فوج کے میجر سمیت 4 اہلکار ہلاک ہوئے۔ ہلاک ہونے والے افسر اور اہلکاروں کا تعلق راشٹریہ رائفلز سے تھا۔ بھارتی فورسز ابو قاسم کی شہادت کو کشمیر میں مسلح حریت پسندوں کے خلاف بڑی کامیابی قرار دے رہی ہیں۔ ابو قاسم پر پہلے ہی 15 سے زائد بھارتی فوجی اہلکاروں کو ہلاک اور 30 کو زخمی کرنے کے الزامات ہیں۔ بھارتی حکومت نے ابو قاسم کے سر کی قیمت 20 لاکھ روپے مقرر کر رکھی تھی۔ دوسری طرف پلہالن پٹن میں پولیس اور مظاہرین کے مابین شدید جھڑپوں کے دوران ایک پولیس افسر سمیت 6اہلکار زخمی ہوگئے۔ جھڑپوں کا یہ سلسلہ بدھ کی صبح اس وقت شروع ہوا جب علاقے کے کئی نوجوان سرینگر بارہمولہ شاہراہ پر نمودار ہوکر احتجاج کرنے لگے۔ احتجاجی نوجوانوں کا کہنا تھا کہ منگل کو ہڑتال کے دوران فورسز نے ایک مقامی مسجد کے شیشے توڑ دیے۔ احتجاج کے بعد کرفیو جیسی پابندیاں عائد کرنے کے باوجود پولیس اور مظاہرین کے مابین دن بھر جھڑپوں کا سلسلہ جاری رہا، جبکہ سرینگر مظفر آباد شاہراہ پر کئی گھنٹوں تک ٹریفک کی نقل وحرکت معطل رہی۔

مزید :

بین الاقوامی -