ہائی کورٹ :میڈیاکو بلدیاتی انتخابات کے غیر سرکاری نتائج نشر کرنے کی اجازت مل گئی

ہائی کورٹ :میڈیاکو بلدیاتی انتخابات کے غیر سرکاری نتائج نشر کرنے کی اجازت مل ...
ہائی کورٹ :میڈیاکو بلدیاتی انتخابات کے غیر سرکاری نتائج نشر کرنے کی اجازت مل گئی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہورہائی کورٹ نے میڈیا کو بلدیاتی انتخابات کے غیر سرکاری نتائج نشر کرنے کی اجازت دے دی ہے تاہم الیکٹرانک میڈیا پولنگ کا وقت ختم ہونے کے ایک گھنٹے بعد نتائج نشر کرسکے گا جس کے ساتھ واضح طور پر "غیر مصدقہ نتیجہ "لکھنا ضروری ہوگا۔مسٹر جسٹس محمد فرخ عرفان خان نے یہ عبوری حکم پاکستان براڈ کاسٹرز ایسوسی ایشن کی درخواست پر جاری کیا۔فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ میڈیاکی آزادی پر قدغن نہیں لگائی جاسکتی۔درخواست گزاروں کے وکلاء نے عدالت میں موقف اختیارکیا کہ آئین کے آرٹیکل 19اور19(اے )کے تحت اطلاعات تک رسائی میڈیا اورشہریوں کا بنیادی حق ہے۔الیکشن کمیشن کی جانب سے 26اکتوبر کو میڈیا پر بلدیاتی انتخابات کے غیرسرکاری اورغیر حتمی نتائج نشر کرنے پر پابندی عائد کی گئی، جو خلاف آئین ہے۔عدالت سے استدعا کی گئی کہ نوٹیفکیشن کو کالعدم قراردیا جائے۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ لوگوں تک انتخابات کے مصدقہ نتائج پہنچانے کے لئے نوٹیفکیشن جاری کیاگیا۔ عدالت نے دلائل سننے کے بعد میڈیاکوبلدیاتی انتخابات کے غیرحتمی نتائج نشرکرنے کی مشروط اجازت دے دی۔ عدالت نے عبوری حکم جاری کرتے ہوئے قرار دیا کہ میڈیاپولنگ کاعمل ختم ہونے کے ایک گھنٹے بعدنتائج جاری کرے گا اورہرنتیجے کے ساتھ ’’غیرمصدقہ نتیجہ‘‘ کالفظ واضح طورپرلکھے گا۔مسٹر جسٹس محمد فرخ عرفان خان نے ریمارکس دیئے کہ میڈیاکی آزادی پرکوئی قدغن نہیں لگائی جاسکتی۔معلومات تک رسائی عوام کابنیادی حق ہے۔عوام کوآئینی حق سے محروم نہیں کیاجاسکتا۔پاکستانی صحافی ذمہ دارانہ رپورٹنگ کرتے ہیں۔انصاف کاتقاضاہے کہ الیکشن کمیشن بادی النظر میں میڈیاپرکوئی ایسی پابندی نہیں لگاسکتا۔عدالت نے وفاق،پنجاب حکومت اورالیکشن کمیشن کو نوٹس جای کرتے ہوئے ایک ہفتے میں جواب بھی طلب کرلیاہے۔

مزید :

لاہور -