ہائی کورٹ :بلدیاتی انتخابات میں مخصوص نشستوں پر الیکشن کرانے کی درخواستیں مسترد

ہائی کورٹ :بلدیاتی انتخابات میں مخصوص نشستوں پر الیکشن کرانے کی درخواستیں ...
ہائی کورٹ :بلدیاتی انتخابات میں مخصوص نشستوں پر الیکشن کرانے کی درخواستیں مسترد

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہورہائیکورٹ نے بلدیاتی انتخابات میں خواتین ،نوجوانوں معذوروں اور اقلیتوں کی مخصوص نشستوں پر الیکشن نہ کروانے کے خلاف دائر درخواستیں مسترد کردیں۔عدالت عالیہ نے پاکستان تحریک انصاف کے جہانگیرترین، عمرسرفراز چیمہ، عوامی تحریک سمیت دیگر کی درخواستوں پر 15اکتوبر کو محفوظ کیا گیا تھا جو اب سنا دیا گیا ہے۔جسٹس مامون رشید شیخ نے نوجوانوں،خواتین،مزدوروں اوراقلیتوں کوبراہ راست الیکشن میں حصہ لینے کی اجازت دینے کی بجائے انہیں سلیکشن کے ذریعے منتخب کرنے کے طریقہ کارکے خلاف درخواستوں پر محفوظ کیا تھا۔درخواست گزاروں کے وکلاء نے موقف اختیارکررکھا تھا کہ آئین کے آرٹیکل 140کے تحت بلدیاتی انتخابات سمیت ہرقسم کے انتخابات میں خفیہ رائے شماری کے ذریعے امیدواروں کاا چناﺅکیا جانا لازم ہے لیکن پنجاب حکومت نے لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2013ء کی شق 13کے تحت بلدیاتی انتخابات میں حصہ لینے کے لئے خواتین، اقلیتوں ،کسانوں اورنوجوانوں کی مخصوص نشستوں پرخفیہ رائے شماری کے ذریعے انتخاب کرنے کی بجائے سلیکشن کاطریقہ کار وضع کیاہے۔وکلا ءے قانونی نکتہ اٹھایا کہ انتخابات کی جگہ سلیکشن کاطریقہ کار آئین سے متصادم ہے۔ وکلاءے عدالت سے استدعا کی لوگل گورنمنٹ ایکٹ 2013ء کے سیکشن 13کوکالعدم قرار دے کرمحضوص نشستو ں پربراہ راست انتخابات کرانے کا حکم دیا جائے۔ سرکاری وکلا ء نے کہا کہ مذکورہ درخواستیں قابل سماعت نہیں ،انہیں مسترد کیا جائے۔ عدالت نے فریقین کے وکلاءے دلائل سننے کے بعد15اکتوبر کو فیصلہ محفوظ کیا تھا۔ عدالت نے بلدیاتی الیکشن کے 31اکتوبر کو ہونے والے انتخات سے ایک روز قبل سناتے ہوئے بلدیاتی انتخابات میں نشستیں مخصوص کرنے کے خلاف دائر درخواستیں مسترد کردیں۔

مزید :

لاہور -