کن خواتین کو جنسی زیادتیوں کا نشانہ بنایا جاسکتا ہے؟ چینی عدالت نے ایسا فیصلہ سنا دیا کہ دنیا بھر میں بحث شروع ہوگئی

کن خواتین کو جنسی زیادتیوں کا نشانہ بنایا جاسکتا ہے؟ چینی عدالت نے ایسا ...
کن خواتین کو جنسی زیادتیوں کا نشانہ بنایا جاسکتا ہے؟ چینی عدالت نے ایسا فیصلہ سنا دیا کہ دنیا بھر میں بحث شروع ہوگئی

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) خواتین کے خلاف جرائم میں خود خواتین کا کردار کیا ہوتا ہے؟ یہ ایک ایسا سوال ہے جو عرصے سے جواب طلب ہے۔ گزشتہ روز ایک چینی عدالت نے اس سوال کا جواب دیتے ہوئے ایسے ریمارکس دے دیئے کہ ہنگامہ برپا ہو گیا۔ چینی عدالت کا کہنا ہے کہ جو خواتین بری عادتوں میں مثلاً شراب نوشی اور سگریٹ نوشی وغیرہ میں مبتلاہوتی ہیں ان کے ساتھ جنسی زیادتی کے چانس زیادہ ہوتے ہیں۔عدالت کی طرف سے ایک جنسی زیادتی کے کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے یہ ریمارکس دیئے گئے۔

مزید جانئے: انٹرنیٹ پر مشہور وہ جھوٹ جنہیں لوگ آج بھی سچ سمجھتے ہیں

جج کا کہنا تھا کہ گزشتہ 3سال میں خواتین کے ساتھ جنسی زیادتیوں کے 162کیس مذکورہ عدالت میں آئے۔ زیادتی کا شکار ہونے والی ان 162خواتین میں سے 151خواتین ایسی تھی جو ان بری عادتوں میں پڑی ہوئی تھی۔ جج کا کہنا تھا کہ ایسی خواتین کو آسانی سے مرد اپنا شکار بنا لیتے ہیں۔ ان کی نسبت جن خواتین میں یہ عادتیں نہیں ہوتیں وہ مردوں کے جال میں جلد نہیں آتیں۔جج کے ان ریمارکس پر سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث نے جنم لے لیا ہے۔ کچھ لوگ جج کے ریمارکس کو سراہ رہے ہیں جبکہ کچھ اس کی مخالفت میں دلائل دے رہے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -