ریفنڈز معاملات میں غیر ضروری تاخیر متاثر کر رہی ہے‘ پیاف

ریفنڈز معاملات میں غیر ضروری تاخیر متاثر کر رہی ہے‘ پیاف

لاہور ( کامرس رپورٹر) پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) نے کہا ہے کہ ریفنڈز کے معاملات میں غیر ضروری تاخیر صنعتکاروں اور برآمد کنند گان کو بری طرح متاثر کر رہی ہے ، بزنس کمیونٹی ریفنڈز کی عدم ادائیگی کے باعث بحران کا شکار ہے،بزنس کمیونٹی کے کیش فلو میں تعطل آجانے سے بیرونی ممالک میں مال کی ترسیل بروقت نہیں ہو پا رہی جس سے لوکل اور انٹرنیشنل آڈرز کی تکمیل میں دیر ہو رہی ہے۔ چیئرمین عرفان اقبال شیخ نے گزشتہ روز سینئر وائس چیئرمین تنویر احمد صوفی اور وائس چیئرمین خواجہ شاہ زیب کے ہمراہ ایک مشترکہ بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ ریفنڈز کی ادائیگی کے کام کو سپیڈ اپ کیا جائے تاکہ کیش فلو کی صورتحال بہتر ہو سکے اورگرتی ہوئی برآمدات کو سہارا ملے۔عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ بزنس کمیونٹی کے ابھی بھی تقریباََ 200 ارب روپے کے ریفنڈز رکے ہوئے ہیں۔ کیش فلو کے رک جانے سے گزشستہ سال کے مقابلے میں ملکی برآمدات میں 13.42 فیصد کمی آئی ہے جبکہ مد مقابل بنگلہ دیش کی برآمدات میں 11.82 فیصد اضافہ ہو اہے۔ پچھلے سال ریکارڈ ریونیو وصولی کے باوجود ایکسپورٹرز ریفنڈ سے محروم ہیں جس سے بزنس کمیونٹی کے آئندہ کے کے لائحہ عمل شدیدمتا ثر ہورہے ہیں۔ سینئر وائس چیئرمین تنویر احمد صوفی اورخواجہ شاہ زیب اکرم نے کہا ایکسپورٹرز کے تمام ریفنڈز بلا امتیاز اور غیر جانب دارانہ فوری ادائیگی کا حکومتی وعدہ ہر حال میں پورا کیا جائے اور بزنس کمیونٹی کے دیگر مسائل کو بھی ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے تاکہ کاروبای برادری ملکی ترقی میں اپنا کردا بہتر انداز میں ادا کر سکے۔

مزید : کامرس