غیر قانونی مذبحہ خانوں میں مضر صحت گوشت کی فروخت، بیماریاں پھیلنے کا خدشہ

غیر قانونی مذبحہ خانوں میں مضر صحت گوشت کی فروخت، بیماریاں پھیلنے کا خدشہ

لاہور(اسد اقبال،تصاویر علی رضا)صو بائی دا ر ا لحکو مت میں ضلعی حکومت ،محکمہ لائیو سٹا ک اور فو ڈ اتھارٹی کمیٹی کے باو جو د شہر کے مختلف علاقوں میں لاغر ،کمزور و زخمی جانوروں کے مضر صحت گو شت کی فروخت کا سلسلہ کم ہونے کی بجائے بتدریج بڑھتا جا رہا ہے ۔شہر کے گلی محلوں اور دور دراز کے علاقوں میں پیمکو کے مہر شدہ گو شت کے ساتھ ساتھ غیر قانونی مذبحہ خانوں میں ذبح کر دہ گو شت بھی بڑے پیمانے پر فروخت کیا جارہا ہے جس سے شہریوں کی صحت کے معاملات خراب ہو نے کے ساتھ ساتھ ضلعی خزانہ کو بھی لاکھوں روپے نقصان کا سامنا ہو رہا ہے ۔بتایا گیا ہے کہ ضلعی حکو مت کی چشم پو شی کے پیش نظر صو بائی دارالحکومت کے قصابوں نے ناجائز منافع خور ی کے لیے شہریوں کو لاغر و بیمار جانوروں کا گوشت کھلایا جارہا ہے جس کے لیے قصابوں نے گلی محلوں اور شہر کے مضافاتی علاقوں میں گھروں میں مذبحہ خانے بنا رکھے ہیں جہاں پر قصاب جانور وں کو ذبح کر کے دکانوں میں گو شت فروخت کر تے ہیں۔بتایا گیا ہے کہ لاہو ر کے مضافاتی علاقوں میں قصاب شہریوں کی آنکھ میں دھو ل جھو نکنے کے لیے بکرے اور چھترے کا گوشت چھ سو روپے کلو تک جبکہ گائے بھینس کا گوشت اڑھائی سوروپے کلو تک فروخت کر کے شہریوں کی صحت کے ساتھ کھیلا جا رہا ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ قصابوں نے ضلعی حکومت کے قانون کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے شہر میں زیادہ تر مادہ جانوروں کا گوشت فروخت کیا جاتا ہے جو نر جانور کی نسبت قیمت میں 30 فیصد تک سستا ہو تا ہے جبکہ قصاب بیمار اور مادہ جانور خریدنے کے لیے ٹو لیوں کی صورت میں دیہی علاقوں کا رخ کر تے ہیں۔ محکمہ لائیو سٹاک کے تر جمان کا کہنا ہے کہ شہر میں مضر صحت گو شت فروخت کر نے والوں کے خلاف کر یک ڈاؤ ن کا سلسلہ جاری ہے اور روزانہ کی بنیاد پر محکمہ لائیو سٹا ک کے انسپکٹر اپنے اپنے علاقوں میں قصابوں کی دکانوں کا معائنہ کر تے ہیں ۔انھو ں نے مذید کہا کہ شہر میں جانوروں کو ذبح کر نے کے لیے پیمکو سنٹر بنایا گیا ہے جہاں پر جانوروں کے طبی معائنے کے بعد تصدیق شدہ ہو نے کے لیے گوشت پر مہر لگائی جاتی ہے تاکہ شہری بلا کسی خوف سے تصدیق شدہ گوشت خرید سکیں۔ پاکستان سے گفتگو کر تے ہوئے قصاب ویلفیئر ایسو سی ایشن کے صدر ملک افتخار وسیم نے کہا کہ لاغر بیمار جانوروں کو ذبح کر کے شہریوں کو گو شت فروخت کرنے کا الزام غلط ہے ہم خاندانی لوگ ہیں اور ہماری قصاب برادری جو گوشت شہریوں کو فروخت کرتے ہیں وہی اپنے گھروں میں پکاتے ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ قصابوں کو جانور ذبح کروانے کے لیے مشکلات کا سامنا اٹھانا پڑتا ہے کیو نکہ جب سے حکومت نے پرائیویٹ کمپنی پیمکو کو ٹھیکہ دے دیا ہے تب سے قصاب پر یشان حال ہیں کیو نکہ پیمکو دور ہو نے کے ساتھ ساتھ ایمر جنسی جانور کا ایک ہزار روپے جبکہ چھوٹے جانور کا ڈیڑھ سو روپے تک وصو ل کر تی ہے انھوں نے مطالبہ کیا ہے کہ ضلعی حکومت شہر میں مذید مذبحہ خانے بنائے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1