مہدی حسن نے انگلش ٹیم کیلئے ڈراؤنا خواب ،6وکٹیں اڑادیں

مہدی حسن نے انگلش ٹیم کیلئے ڈراؤنا خواب ،6وکٹیں اڑادیں

میرپور (مانیٹرنگ ڈیسک) انگلینڈ اور بنگلہ دیش کے درمیان جاری دوسرے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز کھیل کے اختتام پر بنگلہ دیش نے دوسری اننگز میں 3 وکٹوں کے نقصان پر 152 رنز بنا لئے ہیں اور اسے انگلینڈ کے خلاف 128 رنز کی برتری حاصل ہو گئی ہے۔ بنگلہ دیش کی جانب سے امرالقیس 59 رنز کیساتھ کریز پر موجود ہیں۔تفصیلات کے مطابق شیربنگلہ نیشنل سٹیڈیم میرپور میں کھیلے جا رہے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز انگلینڈ نے 50 رنز 3 کھلاڑی آؤٹ سے اننگز کا آغاز کیا تو مجموعی سکور میں صرف 14 رنز کے اضافے پر ہی معین علی 10 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔ 69 کے مجموعی سکور پر بین سٹاکس بھی ہمت ہار گئے اور کھاتہ کھولے بغیر ہی آؤٹ ہوئے۔جو روٹ نے کچھ مزاحمت کی اور 56 رنز بنانے میں کامیاب ہوئے جبکہ کرس ووکس نے بھی ان کا خوب ساتھ دیا اور 46 رنز بنائے۔ عادل راشد نے بھی توقع کے برعکس بنگالی بلے بازوں کا خوب امتحان لیا اور 44 قیمتی رنز جوڑے۔ان کے علاوہ کوئی بھی کھلاڑی بنگالی دیشی باؤلرز کا سامنا کرنے میں ناکام رہا اور جلد ہی ان کی بساط لپٹ گئی۔ دیگر بلے بازوں میں الیسٹر کک نے 14، بین ڈوکیٹ نے 7، گیری بیلانس نے 9، جونی بیرسٹو نے 24 اور ظفر انصاری نے 13 رنز بنائے جبکہ سٹیفن فن بغیر کوئی سکور بنائے ہی آؤٹ ہوئے۔بنگلہ دیش کی جانب سے مہدی حسن مرزا نے تباہ کن با?لنگ کرتے ہوئے انگلینڈ کی بیٹنگ لائن کو ڈھیر کیا اور 6 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی جبکہ تیج الاسلام نے 3 اور شکیب الحسن نے ایک وکٹ حاصل کی۔بنگلہ دیش نے 24 رنز کے خسارے کے ساتھ دوسری اننگز کا آغاز کیا تو اوپنرز نے محتاط کھیل پیش کرتے ہوئے پہلی وکٹ کی شراکت میں 65 رنز جوڑے اور اس موقع پر انگلینڈ کو پہلی کامیابی حاصل ہوئی جب تمیم اقبال 40 رنز بنا کر ظفر انصاری کی گیند پر الیسٹر کک کے ہاتھوں کیچ ہو گئے۔

نئے آنے والے کھلاڑی مومن الحق مجموعی سکور پر صرف ایک رنز کے اضافے کے بعد ہی پویلین لوٹ گئے جس کے بعد امر القیس اور محمود اللہ نے تیسری وکٹ کی شراکت میں 86 رنز جوڑے اورٹیم کی ڈولتی کشتی کو سہارا دیا۔ بنگلہ دیشی ٹیم اب تک کی کارکردگی سے خاصی مطمئن نظر آ رہی تھی کہ آخری اوور کی آخری گیند پر محمود اللہ اپنی وکٹ گنوا بیٹھے اور یوں ’ہیپی اینڈنگ‘ تبدیل ہو کر ’سیڈ اینڈنگ‘ ہو گئی۔دوسرے روز کے آخری سیشن میں انگلش باؤلرز خاطر خواہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے میں ناکام رہے اور ظفر انصاری نے 2 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی جبکہ بین سٹوکس ایک وکٹ حاصل کر سکے۔قبل ازیں میچ کا پہلا روز انتہائی ڈرامائی ثابت ہوا۔ بنگلہ دیش نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تو 1 کے مجموعی سکور پر ہی بنگلہ دیشی اوپنر امرالقیس پویلین لوٹ گئے۔ پہلے نقصان کے بعد تمیم اقبال نے مومن الحق کے ساتھ مل کر دوسری وکٹ کی شراکت میں 170 رنز جوڑ کر ٹیم کی پوزیشن خاصی مضبوط کر دی۔ تمیم اقبال نے بہترین بلے بازی کرتے ہوئے 12 چوکوں کی مدد سے 104 رنز بنائے جبکہ مومن الحق نے 10 چوکوں کی مدد سے 66 رنز بنائے۔معین علی نے تمیم اقبال کی اننگز کا خاتمہ کیا کیا کہ پھر وہ کسی بھی بلے باز کو خاطر میں نہ لائے اور بنگلہ دیشی ٹیم کیساتھ وہ کر دیا جس کا کسی نے سوچا بھی نہ تھا، بنگال ٹائیگرز خزاں کے پتوں کی طرح جھڑ گئے اور پوری ٹیم صرف 220 رنز بنا کر ہی آؤٹ ہو گئی۔ بنگلہ دیش کے 7 بلے باز دوہرا ہندسہ عبور کرنے میں بھی ناکام رہے اور ایک اچھے آغاز کو انتہائی ڈراؤنے اختتام میں تبدیل کر دیا۔ بنگلہ دیش کی جانب سے امرالقیس نے 1، محمود اللہ نے 13، شکیب الحسن نے 10، مشفیق الرحیم نے 4، شوواگاتا ہوم نے 6، مہدی حسن مرزا نے 1 اور تیج الاسلام نے 5 رنز بنائے جبکہ شبیر رحمان اور قمرالاسلام بغیر کوئی رنز بنائے آؤٹ ہوئے۔انگلینڈ کی جانب سے معین علی نے تباہ کن باؤلنگ کرتے ہوئے بنگلہ دیشی بیٹنگ لائن کو تباہ کر دیا اور 5 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی جبکہ کرس ووکس نے 3 اور بین سٹوکس نے 2 وکٹیں حاصل کیں۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی