غیر پیشہ ورانہ سرگرمیوں میں ملوث وکلاء کیخلاف کاروائی کیلئے ٹربیونلز بجال

غیر پیشہ ورانہ سرگرمیوں میں ملوث وکلاء کیخلاف کاروائی کیلئے ٹربیونلز بجال

 لاہور(نامہ نگارخصوصی)غیرپیشہ ورانہ سرگرمیوں میں ملوث وکلاء کیخلاف کاروائی کے لئے پنجاب بارکونسل کے پانچوں ٹربیونلز کو فعال کردیاگیاہے۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے ان ٹربیونلز کی سربراہی کے لئے عدالت عالیہ کے 5جج نامزد کردیئے ہیں ۔لاہور میں 2جبکہ باقی تینوں علاقائی بنچوں میں ایک ایک ٹربیونل کام کرے گا۔ پنجاب بارکونسل کے لیگل پریکٹیشنرز اینڈ بارکونسل ایکٹ 1973ء کے تحت جاری کئے گئے نوٹیفکیشن کے مطابق جسٹس محمد قاسم خان اورجسٹس شمس محمود مرزاکو پنجاب بارکونسل کے لاہور ٹربیونلز کے چیئرمین نامزد کیاگیا ہے، جسٹس محمد امین الدین خان کو بہاولپور ، جسٹس شاہد بلال حسن کو ملتان اورجسٹس سید شہبازعلی رضوی کو روالپنڈی بنچ کے ٹربیونل کی سربراہی سونپی گئی ہے ۔ ٹربیونلز پنجاب بارکونسل کی ڈسپلنری کمیٹی کی سفارش پرلیگل پریکٹیشنرز اینڈ بارکونسل ایکٹ کی خلاف ورزی کے مرتکب وکلاء کے خلاف کاروائی کریں گے۔ مس کنڈکٹ ٹربیونل کے ممبرمنیرحسین بھٹی نے چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ کوپیشہ ورانہ بے ضابطگی کے مرتکب وکلاء کے خلاف کارروائی کے لئے ٹربیونلز کو فعال کرنے کی تحریری درخواست دی تھی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر