تجاوزات کیخلاف مہم ، غریبوں کے بجائے با اثر مافیا کو ٹاگٹ کرنیکا حکم ، مختلف محکموں کو سرکلر روانہ

تجاوزات کیخلاف مہم ، غریبوں کے بجائے با اثر مافیا کو ٹاگٹ کرنیکا حکم ، مختلف ...

ملتان ‘ ڈیرہ ‘ عبدالحکیم ‘میاں چنوں ‘ چوک اعظم ‘ دائرہ دین پناہ ‘ خانیوال ( سٹی رپورٹر ‘ خصوصی رپورٹر ‘ نمائندگان پاکستان ) ملتان(بقیہ نمبر49صفحہ12پر )

(سپیشل رپورٹر ) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے تجاوزات کے خلاف حالیہ مہم کے دوران کچی آبادیوں اور ریڑھی و ٹھیلے والوں کے خلاف کارروائی کو حکومت کی پالیسی کی خلاف قرار دیا ہے اور ایسے واقعات پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے حکم دیا ہے کہ غریب لوگوں کو ٹارگٹ کرنے کے بجائے عرصہ دراز سے سرکاری قیمتی اراضی پر قابض منظم گروہوں اور قبضہ مافیا کے خلاف ایکشن لیا جائے۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایات کی روشنی میں چیف سیکرٹری پنجاب نے صوبہ بھر کے کمشنرز ، ڈپٹی کمشنرز ، ترقیاتی اداروں اور لوکل گورنمنٹ کے سربراہوں کو ایک سرکلر جاری کردیا ہے۔اس چٹھی میں چیف سیکرٹری نے افسران سے کہا ہے کہ حالیہ آپریشن کے دوران قبضہ مافیا سے اربوں روپے کی اراضی واگزار کرائی گئی ہے جو کہ ایک بڑی کامیابی ہے۔ماضی میں اس طرح کی کامیاب مہم کی مثال موجود نہیں ہے۔لیکن اس کارروائی کے دوران کچھ اضلاع میں دیہاڑی دار غریب افراد کے خلاف بدقسمت واقعات رونما ہوئے ہیں جو کہ حکومت کی واضح گائیڈ لائن کے خلاف تھے۔ اس طرح کے واقعات سے حکومت کی قیمتی جائیدادوں اور اراضی پر قابض مافیا کے خلاف مہم گہنا جائے گی اور اسے حاصل عوامی سپورٹ متاثر ہوگی۔ چیف سیکرٹری نے چٹھی میں تجاوزات مافیا کے خلاف سرکاری افسران کی کامیاب مہم پر تعریف کی ہے اور ساتھ ہی واضح کیا ہے کہ اگر حکومت کی ہدایات کی خلاف ورزی کرتے ہوتے کسی غریب مزدور یاٹھیلے،ریڑھی والے کے خلاف کارروائی کی شکایت موصول ہوئی تو متعلقہ افسر کے خلاف پنجاب ایمپلائز ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے گی۔جبکہ ریلوے انتظامیہ ملتان نے قبضہ مافیا کے خلاف کاروائی کرتے ہوئے چناب ریسٹ بنک اسٹیشن کے قریب ریلوے کی کروڑوں روپے مالیت کی اراضی واگزار کروالی،قبضہ مافیا کے خلاف آپریشن مین ریلوے انتظامیہ اور ریلوے پولیس نے حصہ لیا۔ ادھر گورنمنٹ آف پنجاب کے ویژن کے مطابق گرین اینڈ کلین پنجاب کے حوالے سے ڈپٹی کمشنر ملتان مدثر ریاض ملک کی ہدایت پرنا جائز قابضین اور نا جائز تجاوزات کے خلاف ایم ڈی اے انفورسمنٹ ٹیم کا دوسرے محکموں کے ساتھ مل کر مشترکہ آپریشن جاری ہے۔گرین اینڈ کلین پنجاب کے حوالے سے کئے گئے آپریشن کی سربراہی اسسٹنٹ کمشنر سٹی قاضی منصور نے کی ۔آپریشن میں ایم ڈی اے کے علاوہ ضلعی انتظامیہ ،میونسپل کارپوریشن، پولیس کی بھاری نفری اوڈیمالیشن اسکوارڈ نے حصہ لیا۔ آپریشن چونگی نمبر خانیوال روڈ،ڈیرہ اڈا ،مچھلی مارکیٹ ، ایم ڈی اے چوک اور سورج میانی روڈپر کیا گیا ۔آپریشن میں روڈ کی حدود میں قائم عارضی و مستقل تجاوزات کو ختم کر دیا گیا اورسامان مسروقہ قبضہ میں لے لیا گیا۔آپریشن کے دوران بھاری مشینری کے ذریعے دوکانوں کے شیڈز ،تھڑے،ریمپ اور سائن بورڈز توڑ کر رود کو مقررہ حد تک کشادہ کر دیا گیا۔اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر سٹی قاضی منصور نے کہا کہ آپریشن سے قبل نوٹس جاری کئے جا رہے ہیں۔ قبضہ مافیہ تجاوزات کو ازخود مسمار کر دیں وارنہ انتطامیہ تجاوزات مسمار بھی کرے گی او رمافیہ کے خلاف کااروائی بھی کی جائے گی۔آپریشن میں ڈپٹی ڈائریکٹر انفورسمنٹ ایم ڈی اے اکرام عزیز بلوچ ، ڈپٹی ، چیف آفیسر کارپوریشن ،ڈپٹی چیف آفیسر کارپوریشن،چیف آفیسر ضلع کونسل ، موقع پر موجود تھے۔عبدالحکیم کے بازاروں سے تجاوزات ہٹانے کا سلسلہ جاری، مسلسل دو ماہ سے عبدالحکیم کے پانچوں بازاروں میں تجاوزات کے خلاف آپریشن کا سلسلہ جاری ہے آج بھی ریاض حسین شاہ اور محمد اسلم بٹ کی زیرنگرانی متعدد دکانداروں کا سامانِ نمائش و سامانِ تجاوز اٹھا لیا گیا اور متعدد ریڑھی بانوں کو بھی ڈرا دھمکا کر گلی کوچوں میں دھکیل دیا گیا جس سے راستے ایک بار کشادہ ہوگئے،یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ غوثیہ چوک تا ریلوے گیٹ کے ایریا میں فروٹ و سبزی فروش دستی وگدھاریڑھی بانوں کو روزانہ مین روڈ سے ہٹاکر گلی کوچوں میں دھکیل دیا جاتا ہے جس کے سبب لمحہ بھر کیلئے وہ انتظامیہ کی نظروں سے اوجھل ہوجاتے ہیں مگرانتظامیہ کے آپریشن مکمل کرکے واپس جاتے ہیں مذکورہ ریڑھی بان پھر سے مین روڈ پر براجمان ہوجاتے ہیں اور پھر ٹریفک بلاک ہونے لگتی ہے ضرورت اس امر کی ہے کہ متذکرہ ریڑھی بانوں کو مستقل بنیادوں پراراضی مہیا کی جائے۔ علاوہ ازیں ضلع خانیوال میں تجاوزات اور ناجائز قابضین کے خلاف ڈپٹی کمشنر اشفاق احمد چوہدری کی زیر نگرانی مہم 28۔ ویں روز بھی جاری رہی ۔ بلدیہ خانیوال نے شہری حدود میں کاروائی کر کے 24 ۔عارضی تجاوزات کو ختم کرا دیا اور 19 ۔فراد کو وارننگ دی گئی ، اسی طرح بلدیہ چنوں نے مغل بازار میں 17 تجاوزات ، بلدیہ کبیر والہ نے سردار پور روڈ پر قائم 14 تجاوزات کو موقع سے ہٹادیا اور 19 افراد کو وارننگ دی، بلدیہ تلمبہ نے ماموں شیر چوک پر 15 تجاوزات کو موقع پر سے ختم کرادیں جبکہ ضلع کونسل خانیوال نے وجھیانوالہ میں 18 عارضی تجاوزات کو موقع سے ختم کرا دیں ۔ دریں اثناء ریجنل ڈائریکٹر انٹی کرپشن ڈیرہ غازیخان محمد طارق کی ہدایت پر اسسٹنٹ ڈائریکٹر خالد محمود نے ٹیم کے ہمراہ موضع رکھ ابڑیند تحصیل کوٹ چھٹہ میں 94کنال سرکاری اراضی واگزار کرا لی ہے جس کی مالیت تقریبا ڈیڑھ کروڑ روپے ہے اسی طرح ضلع مظفرگڑھ میں 28ہزار کنال سرکاری اراضی کی غلط الاٹمنٹ پر سابقہ اے ڈی سی آر ظفرالسلام اور دیگر عملہ کے خلاف مقدمہ درج کر لیاگیا ہے جس کی تفتیش کی جا رہی ہے . یہ بات ریجنل ڈائریکٹر انٹی کرپشن کے مراسلہ میں کہی گئی ہے ۔جبکہ ضلع لیہ میں جاری کلین اینڈ گرین مہم کے دوران محکمہ ہاوسنگ اینڈ فزیکل پلاننگ نے بائی پاس کوٹ ادوروڈ پر مختلف تجاوزات ختم کروا دیں ہیں اور محکمہ ہاوسنگ کی اراضی پر جہاں بھی تجاوزات پائی گئیں یا رقبہ ناجائز طور پر قابض پایاگیا تو اسی مہم کے دوران واگزار کرایا جائے گا۔یہ بات اسسٹنٹ ڈائریکٹر ہاوسنگ محمد مشتاق نے اے ڈی سی آرفخرالاسلام ڈوگر کو تجاوزات ہٹانے کے آپریشن کے موقع پر بتائی ۔اے سی لیہ صفات اللہ خان ،تحصیلدار محال محبوب اقبال ہنجرا اور میونسپل حکام ہمراہ تھے۔ دائرہ دین پناہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق اربوں روپے مالیتی متروقہ وقف املاق جائیداد با اثر افراد کے آلہ کار قابض مقامی انتظامیہ قبضہ مافیا کے چنگل سے اربوں روپے کی جائیداد سرکاری واگزار کروانے میں بے بس ہو گئی۔ تجاوزات اپریشن دکھاوا مگر تاحال مقامی انتظامیہ نے کسی قبضہ گروپ سے قبضہ واگزار کروانے میں ناکام ہے جبکہ با اثر افراد کے آلہ کاروں نے کمرشل اراضی پر کروڑوں روپے کی دوکانیں تعمیر کر کے فروخت کر دیں ہیں مقامی انتظامیہ با اثر افراد سے سرکاری اراضی متروقہ وقف املاق واگزار نہ کرا سکی اور اسی طرح ضلع کونسل مظفر گڑھ کی اربوں روپے مالیتی اراضی واقع نیوبس سٹینڈ و احمد یار پارک کے ملحقہ پر قابضین کا راج برقرار ہے اور گورنمنٹ بوائز ہائی سکول کے گراؤنڈ پر محکمہ محال کے پٹواری کی ملی بھگت سے با اثر افراد نے ٹیلی نار کمپنی کا ٹاور لگوایا جس کا کرایہ قومی خزانے کی بجائے قبضہ گروپ ہڑپ کر رہے ہیں شہریوں کی متعدد درخواستوں پر مقامی انتظامیہ نے کوئی نوٹس نہیں لیا اور نہ ہی کوئی کاروائی کی شہریوں کا چیف جسٹس آف پاکستان،چیئرمین نیب ،جنرل منیجر FIA،DCOمظفرگڑھ و اعلیٰ حکام سے مطالبہ ہے کہ فوری تحقیقات کراکے سرکاری اراضی قبضہ گروپ کے چنگل سے واگزار کرائی جائے۔ اس کے علاوہ عبدالحکیم میں دو ہزار کنال سے زائد سرکاری رقبہ پر مختلف با اثر افراد نے قبضہ کر کے فصلیں کاشت کر رکھی ہیں، محمکہ ما ل تعاون کی وجہ سے واجبات ادا نہ کرنے والوں کے خلاف کاروائی نہیں کرتی ہے ،شہریوں نے سرکاری رقبہ پر عرصہ دراز سے قابض با اثر افراد کے خلاف کاروائی اور سرکاری رقبہ پر بنائے گئے مکانات کے علاوہ سرکاری رقبہ فروخت کرنے والوں کے خلاف موثر کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ خانقاہ شریف میں نہرکے کنارے قبضہ مافیہ کی سرکاری ڈسپنسری کی زمین پر بنائی گئی مارکیٹ گرانے اور قبضہ مافیہ سے سرکاری زمین واہ گذارکرانے کے لیے گذشتہ روز دکانداروں کو تحصیلدار بھاولپور صدر کی طرف سے نوٹس دیے گئے ہیں کہ دونومبر تک ڈسپنسری کی سرکاری زمین خالی کردی جائے اوردکانوں سے اپنا سامان اٹھالیا جائے اگر دونومبر تک یہ مارکیٹ خالی نا کی گئی تو بھاری مشینری کے ساتھ مارکیٹ گراکر سرکاری زمین واہ گذار کرالی جائے گی اور دکاندار اپنے نقصان کے خود ذمہ دار ہوں گے اس مارکیٹ میں اکثریت کرائے کے دکانداروں کی ہے جن کا کہنا ایسی خبریں پہلے بھی کئی دفعہ گردش کرتی رہی ہیں ان کو گرانا مشکل لگتا ہے ۔ نواحی علاقہ وجھیانوالہ گاؤں67/15Lبدرو موڑ کے قریب مربع نمبر65 آٹھ ایکڑ رقبہ سرکاری قاغذات میں قبرستان اور عید گاہ کے لئے مختص کیا گیا ہے جس پر قبضہ مافیا نے قبضہ جما کر مکانات کی تعمیر کے علاوہ اس کا کچھ حصہ فروخت بھی کرڈالا ہے اور کچھ رقبے سے ریت نکال کر فروخت بھی کی جارہی ہیجو کہ وہ نہی کرسکتے ۔ قبرستان اور عید گاہ کے لئے مختص کئے گئے رقبے کو واگزار کروانے کے لئے اہل علاقہ کی جانب سے اعلی حکام کو درخواستیں بھی دی گئی ہیں مگر تا حال کوئی کارروائی عمل میں نہ لائی گئی ہے اہلیان چک نے چیف جسٹس آف پاکستان سے از خود نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ بہاولپور بستی کرناں اور نشاط کالونی میں نامعلوم افراد کی طرف سے رات کے اندھیرے میں تجاویزات کے خلاف آپریشن کے نشانات لگائے جانے پر اہل میں تشویش کی لہر۔ گزشتہ رات رات کے اندھیرے میں کچھ نامعلوم افراد نے بسی کرناں اور نشاط کالونی میں تجاوزات کے خلاف آپریشن کے نشانات لگائے جس سے علاقے میں غم و غصّے کی لہر اور شدید تشویش پیدا ہوگئی جب انجمن تاجران کے صدر ملک محمد مجید چنڑ اور انجمن تاجران کے عہدے داران امیر عباس شاہ،حاجی اقبال ،حاجی الطاف،محمد عامر،محمد شہزاد،ماما مونا اور دیگر نے علاقے کے پٹواری،میونسپل کارپوریشن اور ضلعی انتظامیہ سے اس بارے دریافت کیا تو سب نے اس آپریشن سے لاعلمی کا اظہار کیا،دوسری جانب انجمن تاجران کے صدر ملک محمد مجید چنڑ نے انجمن تاجران کے عہدے داروں اور علاقے کے لوگوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چند مخالفین اور شرپسند عناصر حکومت کو بدنام کرنے کے لیے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر کے علاقے کی عوام کو پریشان کرنے کی مذموم کوشش کر رہے ہیں،اگر اس طرح کا کوئی اقدام ہوتا ہے تو شہر بھر کی انجمن تاجران شدید احتجاج کرے گی اور غریب عوام کے ساتھ کھڑی ہو گی۔ علاوہ ازیں وجھیانوالہ کے نواحی گاوں 65/15ایل المعروف گلشن ٹاون روڈ کنارے پڑا سرکاری رقبہ کھیوٹ نمبر144کھتیونی نمبر518 جو 18/20 کنال صوبائی حکومت کی ملکیت ہے بااثر افراد نے قبضہ جما لیا ہے اور مکانات تعمیر کر رکھے ہیی اس سرکاری جگہ میی جنازہ گاہ کی بھی جگہ ہے جسکا راستہ بند کر لیا گیا ہے منع کرنے پر سنگین نتائج کی دھمکیاں دی جاتی ہیی زرائع کے مطابق پتہ چلا ہے کہ ان بااثر افراد کے پاس مبینہ طور پر جرائم پیشہ افراد کا آنا جانا لگا رہتا ہے جس سے ارد گرد کے لوگوں میی خوف کی لہر دوڑی ہوئی ہے اہل علاقہ نے ان با اثر افراد کے خلاف کاروائی ا ور سرکاری رقبہ واگزار کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ شجاع آباد میں محکمہ انہار کی اراضی قابضین سے واگزار ۔ انٹی کرپشن نے قابضین سے سوا پانچ لاکھ روپے سے زائد مزید رقم ریکور کر لی ریکور کرائی گئی رقم سرکاری خزانے میں جمع کرا دی گئی اس کیس میں انٹی کرپشن اب تک سوا بارہ لاکھ روپے رقم ریکور ی کر چکا ہے انٹی کرپشن نے شجاع آباد میں موضع جائی اور موچی پورہ میں اراضی واگزار کرائی تھی انٹی کرپشن نے بارہ سال سے قابض افراد سے ریکوری کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے کیس کی انکوائری اسسٹنٹ ڈائریکٹر انٹی کرپشن حسن رضا کھاکھی کر رہے ہیں۔

تجاوزات کیخلاف مہم

مزید : ملتان صفحہ آخر