پہلا چیئرمین واپڈا گالف ٹورنامنٹ 30نومبر سے شروع ہوگا

پہلا چیئرمین واپڈا گالف ٹورنامنٹ 30نومبر سے شروع ہوگا

لاہور(سپورٹس رپورٹر)واپڈا کی جانب سے پاکستان میں کھیلوں کے فروغ کے لئے ایک اوراہم پیش رفت کی گئی ہے جس کے تحت لاہور میں قومی سطح پر گولف ٹورنامنٹ منعقد کیا جارہاہے۔۔واپڈا سپورٹس بورڈ کی جانب سی۔’’پہلا چیئرمین واپڈا گولف ٹورنامنٹ ‘‘ کے نام سے ہونے والا یہ ایونٹ لاہور کے ڈیفنس رایا گولف اینڈکنٹری کلب میں 30 نومبر سے 2 دسمبر 2018 ء تک کھیلا جائے گا۔تین روز تک جاری رہنے والے اِس ٹورنامنٹ میں پاکستان گولف فیڈریشن سے منسلک گولف کلبز کے کھلاڑی شرکت کریں گے۔ ٹورنامنٹ میں انٹری کے لئے آخری تاریخ 28 نومبر2018 ء مقرر کی گئی ہے اور اْسی دِن پریکٹس راؤنڈ بھی کھیلا جائے گا۔ ٹورنامنٹ کے فارمیٹ کے مطابق امیچورز ، سینئر امیچورز ،خواتین اور ویٹرنز کی کیٹیگریز میں مقابلے ہوں گے۔ٹورنامنٹ میں امیچورز کے لئے 54 ہولز ،سینئر امیچورز اورخواتین کے لئے 36ہولز جبکہ ویٹرنز اور انوی ٹیشنل کے لئے نو نو ہولز کے مقابلے ہوں گے۔قومی ادارے کی حیثیت سے واپڈا پاکستان میں کھیلوں کے فروغ کے لئے بھرپور کوششیں کررہا ہے۔ ’’پہلا چیئرمین واپڈا گولف ٹورنامنٹ ‘‘ایک سالانہ ایونٹ ہوگا جس کا مقصد واپڈاکی گولف کے کھیل کی ترویج میں سرگرم کردار اور پاکستان گولف فیڈریشن سمیت اس کھیل کے فروغ کے لئے کام کرنے والے دیگر سپورٹس گروپس سے مضبوط روابط استوار کرنا ہے۔ اِس ٹورنامنٹ کے ذریعے گولف کے شعبے میں موجود نئے ٹیلنٹ کی تلاش میں بھی مدد ملے گی۔واپڈا گزشتہ پانچ عشروں سے پاکستان میں کھیلوں کی ترقی اور کھلاڑیوں کی بہتری کے لئے بنیادی کردار ادا کررہا ہے۔ واپڈا اس وقت 33کھیلوں میں قومی چمپیئن جبکہ 19کھیلوں میں رنرز اپ ہے۔ یہ پاکستان میں کھلاڑیوں کو ملازمت فراہم کرنے والا سب سے بڑا ادارہ ہے اور واپڈا سپورٹس بورڈ کے مختلف یونٹوں میں 2ہزار ایک سو سے زائد کھلاڑی اور آفیشلز کو ملازمت حاصل ہے۔

واپڈا کی مختلف کھیلوں میں مجموعی طور پر 66ٹیمیں ہیں۔

جن میں سے 37مرد اور 29ٹیمیں خواتین کی ہیں۔۔واپڈا کے کھلاڑی گولڈ کوسٹ آسٹریلیا میں منعقد ہونے والی 21ویں کامن ویلتھ گیمز اور18ویں ایشین گیمز جکارتہ سمیت بین الاقوامی مقابلوں میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔ 2017 ء4 سے اب تک واپڈا کے کھلاڑی پاکستان کی نمائندگی کرتے ہوئے مختلف بین الاقوامی مقابلوں میں سونے کے 11 ، چاندی کے 13 اور کانسی کے 45 تمغے جیت چکے ہیں۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی