صرف اللہ کے قانون سے انصاف کی فراہمی یقینی ہے، مولانا طارق جمیل

صرف اللہ کے قانون سے انصاف کی فراہمی یقینی ہے، مولانا طارق جمیل

لاہور (نامہ نگار خصوصی) معروف مذہبی سکالر مولانا طارق جمیل نے کہا ہے کہ ملکی صورتحال کی اصل وجہ کمزور معیشیت نہیں بلکہ اللہ اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی احکامات سے روگردانی ہے ایسے میں کامیابی اور عزت کا حصول ممکن نہیں در حقیقت ہم سب ہی اس ملک کی بقا اور فناہی کا اوولین سبب ہیں تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ بار کے ڈاکٹر جاوید اقبال آڈیٹوریم میں المصطفیٰ لائرز فورم کے زیر اہتمام فلسفہ شہادت امام حسین علیہ السلام کے عنوان پر کانفرنس کا انعقاد کیا گیا کانفرنس سے مبلغ اسلام مولانا طارق جمیل نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فلسفہ حسینیہ اسلام کی انتہا ہے جس تک پہنچنے کے لیے اللہ اور اس کے رسول ؐ سے روشنائی ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ معیشیت اس ملک کی ریڑھ کی ہڈی نہیں بلکہ عدالتیں اور ہم سب اس ملک کی ریڑھ کی ہڈی ہیں درحقیقت ہم سب ملک کی بقا اور خرابی کا اولین سبب ہیں وکلاء سے خطاب کرتے ہوئے مولانا طارق جمیل کا مزید کہنا تھا کہ کیا انگریزوں کا قانون بھی لوگوں کو انصاف دے سکتا ہے صرف اللہ کے قانون سے انصاف کی فراہمی یقینی ہے انہوں نے زور دیا کہ اللہ کے نبی صلیؐ نے پیدا ہوتے ہی سجدہ کر کے پیغام دیا کہ نماز مت چھوڑنا اگر آپ انصاف کے علمبردار بن جائیں تو اللہ آپ کی نسلیں سوار دے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہم روتے حسین کے لیے ہیں اور کھڑے یذید کی صف میں ہے لہذا اللہ اور رسول کا دامن مت چھوڑیں اور جو قربانی دینا پڑے دے جائیں مولانا طارق جمیل نے کہا کہ کائنات کے اندھیرے ختم کرنے کے لیے سورج اور چاند نور ہیں دلوں کے اندھیرے ختم کرنے کے لیے اللہ اور اس کی کتاب موجود ہے انہوں نے کہا کہ نظام شمسی کو چلانے والی صرف میرے اللہ کی ذات ہے انہوں نے کہا کہ وکلاء اپنی چھوٹی چھوٹی فائلوں کے پیچھے نماز مت چھوڑیں روز حشر کو آپ کی اپنی فائلیں آپ کے اپنے گلے میں ہوں گی مولانا طارق جمیل نے کہا کہ کونسا وکیل ہے جو کہتا ہے کہ سچ بولو تو مقدمہ جیتو گے سیاستدان اور تاجر سے پوچھو وہ بھی سچ کا نہیں کہے گا مولانا طارق جمیل کا مزید کہنا تھا کہ جس قوم میں جھوٹ ہو گا وہاں نجات نہیں ہو گی اتنی بڑی ہستی کے علم کو ٹھکرا رہے ہیں حضور جیسی نظر والے کو چھوڑ دیں اور کہیں ہم عزت پائیں گے انہوں نے کہا کہ چوپڑی روٹیاں کھاؤ مگر اللہ اور اس کے رسول کا دامن مت چھوڑو مولانا طارق جمیل نے کہا کہ اللہ اور اس کے رسول کو پانے کے بعد نفع ہی نفع ہے اللہ کو پانے کے لیے جو قربانی دینا پڑے دے جاؤ مولانا طارق جمیل نے وکلاء کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ ایک ظالم قبضہ معافیہ کا کیس کیوں پکڑ لیتے ہیں کہ روٹی کہاں سے کھائیں گے انہوں نے کہا کہ حضور ؐنے فرمایا جو حسن حیسن سے پیار کرے گا اللہ اس سے پیار کرے گا حضور نے کہا کہ میں قیامت کے روز اپنے نواسوں کا وکیل ہوں گا مولانا طارق جمیل نے کہا کہ اگر آپ انصاف کے علمبردار بنے تو اللہ آپ کی نسلیں سنوار دے گا۔

مزید : صفحہ آخر