پراونشل ڈاکٹر یوتھ فورم کی پالیسی میں ترمیم اور مساوی ٹسٹنگ نہ کرنے پر احتجاج کی دھمکی

پراونشل ڈاکٹر یوتھ فورم کی پالیسی میں ترمیم اور مساوی ٹسٹنگ نہ کرنے پر ...

پشاور(سٹی رپورٹر)پراونشل ڈاکٹرایسوسی ایشن کے یوتھ فورم خیبرپختونخوانے چیف جسٹس آف پاکستان،وزیراعظم عمران خان،پی ایم ڈی سی،وزیراعلیٰ خیبرپختونخوااوردیگرمتعلقہ حکام سے پاکستان میڈیکل اینڈڈینٹل کونسل کے سنٹرل ایڈمیشن پالیسی میں ترامیم اورمیڈیکل کالجوں کیلئے ملک بھرمیں مساوی ٹسٹنگ پالیسی بنانے کامطالبہ کیامطالبات نہ ماننے پرعدالت جانے کے ساتھ ساتھ احتجاج کی دھمکی دیدی۔گزشتہ روزپشاورپریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے پی ڈی اے یوتھ فورم کے صوبائی صدرڈاکٹرشہباز،صوبائی جنرل سیکرٹری ڈاکٹرذیشان خان،ڈاکٹرجاویداوردیگرکاکہناتھاکہ پاکستان میڈیکل اینڈڈینٹل کونسل کے نئے سنٹرل ایڈمیشن پالیسی کے مطابق ملک بھرکے طلبہ دیگرصوبوں میں پرائیویٹ میڈیکل کالجزمیں اوپن میرٹ پرداخلہ لے سکتے ہیں جس سے مقامی طلبہ میڈیکل کالجزمیں داخلوں سے محروم رہتے ہیں کیونکہ پنجاب میں میڈیکل کالجزکیلئے ایم ڈی کیٹ اورخیبرپختونخوامیں ایٹاکے ذریعے الگ الگ ٹسٹس لیے جاتے ہیں اوردونوں کی نتائج ایک دوسرے سے بھی مختلف ہوتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ایم ڈی کیٹ 50فیصدسے زیادہ سکورکرنے والے طلبہ 67فیصدہے جبکہ ایٹامیں 50فیصدسے زیادہ سکورکرنے والے طلبہ 16فیصدہیں۔انہوں نے کہاکہ نئے پالیسی کے مطابق خیبرپختونخواکاایک سٹوڈنٹ بھی داخلے نہیں لے سکے گاجوکہ اس صوبے کے طلبہ کے ساتھ ناانصافی ہے۔انہوں نے کہاکہ ایٹانے حالیہ ایڈمیشن میں طلبہ سے داخلہ فارم کی مدمیں چھ کروڑسے زیادہ روپے بٹورلیے لیکن اس کے باوجود ٹسٹ کے دوران طلبہ کیلئے انتظامات نہ ہونے کے برابرتھے جبکہ اس کے علاوہ تاحال ایٹانے میرٹ لسٹ جاری نہیں کیاہے جس سے طلبہ کی قیمتی وقت ضائع ہورہاہے۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ ایٹاحالیہ ٹسٹ میں نتائج تبدیل کیے بغیرمیرٹ لسٹ جاری کرے اور ایٹاکی نتائج کاموازنہ ایم ڈی کیٹ سے نہ کیاجائے اورملک بھرمیں میڈیکل کالجزکیلئے مساوی ٹسٹنگ پالیسی لائی جائے تاکہ کسی طلبہ کے ساتھ زیادتی نہ ہوجائے اورایٹاسکینڈل ملوث ملزمان کوفوری گرفتارکرکے عوام کے سامنے لائے جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر