بھارت میں 22سالہ دھرنے کا ریکارڈ ،حاصل کچھ نہیں ہوا

بھارت میں 22سالہ دھرنے کا ریکارڈ ،حاصل کچھ نہیں ہوا

مظفرنگر(آئی این پی)بھارتی ریاست اتر پردیش میں ماسٹر وجے سنگھ گذشتہ 22سال سے گھوٹالے اور لینڈ مافیاکے خلاف دھرنا دئیے ہوئے ہیں لیکن ابھی تک کوئی شنوائی نہیں ہو سکی، ماسٹر گاؤں کی 4575بیگھہ زمین میں سے 4ہزار بیگھہ اراضی پر لینڈ مافیا گروپ کے قبضہ کے خلاف دھرنا دئیے ہوئے ہیں۔ بھارتی خبر رساں ادارے کے مطابق اتر پردیش کے ضلع مظفر نگر کے رہنے والے ماسٹر وجے سنگھ 22سال سے جرائم ، گھوٹالے اور لینڈ مافیاکے خلاف دھرنے پر بیٹھے ہوئے ہیں۔جمہوری نظام میں عوام اپنے مطالبات منوانے کیلئے چند گھنٹے یا کچھ دن احتجاج کرتے ہیں۔جوش و خروش کیساتھ نعرہ بازی کرتے ہیں ۔

مظاہرین کے مطالبات تسلیم کئے جانے یا نہ ہونیکی صورت میں احتجاج ختم کر دیا جاتا ہے ۔ ماسٹر وجے سنگھ ایک اسکول ٹیچر ہیں۔گاؤں کی 4575بیگھہ زمین میں سے 4ہزار بیگھہ اراضی پر لینڈ مافیا گروپ نے قبضہ کرلیا۔وہ اس زمین کو مافیا کے چنگل سے آزاد کرانے کیلئے دھرنے پر بیٹھ گئے ۔ وجے سنگھ مسلسل جدوجہد کے باوجود زمین واگزار تو نہیں کراسکے البتہ طویل ترین مدت تک دھرنے پر بیٹھنے کے باعث اپنا نام لمکا بک آف ورلڈ ریکارڈ میں درج کرالیا ۔ وہ کلکٹریٹ کے سامنے ترپال ڈال کر بیٹھے رہتے ہیں ۔ وجیسنگھ اب دہلی کے جنتر منترپر دھرنا دینے کا ارادہ رکھتے ہیں ۔وجئے سنگھ نے بتایا کہ وہ اپنے گاؤں چوسانا میں 4ہزار بیگھہ اراضی جس کی مالیت تقریبا 350کروڑ روپے ہے

مزید : عالمی منظر