معروف صحافی کو سرعام گولیاں مار کر قتل کر دیا گیا

معروف صحافی کو سرعام گولیاں مار کر قتل کر دیا گیا
معروف صحافی کو سرعام گولیاں مار کر قتل کر دیا گیا

  

چارسدہ (ڈیلی پاکستان آن لائن )چارسدہ میں آج صبح چار افراد کو جرگہ کے دوران گولیاں مار کر قتل کر دیا گیا تھا جن میں دو سال کا بچہ بھی شامل تھا تاہم اب ان چاروں مقتولین  کی شناخت ہو گئی ہے،فائرنگ کے نتیجے میں مارے جانے والے احسان شیر پاؤ  چارسدہ پریس کلب کے جنرل سیکریٹری اور سینئر صحافی تھے ۔

تفصیلات کے مطابق  شیراپاؤ کے علاقے تلہ شاہ میں گھریلوے تنازع کو حل کرنے کیلئے جرگے کا انعقاد کیا گیا تھا اس دورا ن ملزم آصف جمال نے فائرنگ کر دی جس کے باعث صحافی احسان شیرپاؤ اور بچے سمیت چار افراد جاں بحق ہو گئے جبکہ ملزم موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا ۔جاں بحق ہونے والے افراد کی لاشوں کو ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ مبینہ قاتل کے حوالے سے یہ اطلاعات بھی موصول ہو رہی ہیں کہ اس نے حال ہی میں اپنی اہلیہ کو بھی گولیاں مار کر قتل کر دیا تھا ۔

پولیس کا کہناہے کہ مقدمہ درج کر کے کارروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے اور ملزم کی  تلاش جاری ہے ۔فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے احسان شیرپاؤ چارسدہ کے جانے مانے صحافی ہیں جبکہ وہ چارسدہ پریس کلب کے جنرل سیکریٹری بھی تھے ۔ چارسدہ میں صحافی برادری کی جانب سے سخت تحفظات کا اظہار کیا جارہاہے اور جلد از جلد قاتل کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا جارہاہے ۔

مزید : علاقائی /خیبرپختون خواہ /چارسدہ