سینکڑوں سال پہلے ابن عربی کی جانب سے بتائی گئی قیامت کی حیران کن نشانیاں، جو بظاہر پوری ہوگئیں

سینکڑوں سال پہلے ابن عربی کی جانب سے بتائی گئی قیامت کی حیران کن نشانیاں، جو ...
سینکڑوں سال پہلے ابن عربی کی جانب سے بتائی گئی قیامت کی حیران کن نشانیاں، جو بظاہر پوری ہوگئیں
کیپشن:    سورس:   Pxfuel

  

 احادیث میں قیامت کی بہت سی نشانیاں بیان کی گئی ہیں، یہ وہ نشانیاں ہیں جو اللہ کے رسول نے اپنی امت کو بتائیں، قیامت کے حوالے سے بعض پیش گوئیاں اہل علم نے بھی کی ہیں جن میں سب سے زیادہ شہرت ابن عربی اور نعمت شاہ ولی نے پائی ہے۔ یہاں ہم ابن عربی کی پیشگوئیوں کا تذکرہ کر رہے ہیں۔

1

اگر تم مشرقی ہو تو تمہارا مغربی حصہ اچھا ہے ، اگر تم مغربی ہو تو مشرقی سمت اچھی ہے، تم فاتح ہو تو ذمیوں اور مفتوحوں سے حالت بدتر ہے اور محکوم ہو تو حاکم قابل رشک و حس بنا ہوا ہے، تم اس کا مطلب نہیں سمجھتے ، قرب قیامت میں ایسے دن آئیں گے کہ مشرق والے مغرب کی تعریف کریں گے اور اس کی خوبیوں پر فریفتہ ہوں اور مغرب والے مشرق کے محاسن بیان کریں گے، دولت مند مفلسوں کو بہتر سمجھیں گے اور مفلس دولت مندوں کو حسرت سے دیکھیں گے ، غرض ایک دوسرے کو دیکھ کر حسد کی آگ میں جلتے ہوں گے ، لوگ اپنے اندر کی خوشیوں اور خوبیوں کو بھول جائیں گے۔

2

اس دور میں خوشی شراب کے عوض خریدی جائے گی، انسان کو قدرے اطمینان و سکون صرف نیند کی نیم بیہوشی میں میسر آسکے گا۔

 غم غلط کرنے کیلئے شراب نوشی کی کثرت آج کے زمانے میں عام ہوچکی ہے، اسی طرح اکثر لوگ نیند کی گولیوں کے بغیر سو ہی نہیں پاتے ، یہ گولیاں ایک طرح کی نیم بیہوشی ہی طاری کرتی ہیں۔

3

اس زمانے میں عورتیں مردوں کے مراتبِ عقل و ہنر سے بڑھ جائیں گی اور مردوں کی مردانگی فقط رسمی رہ جائے گی۔

4

چاندی اور سونے کی قدر گھٹ جائے گی، اور لوہے کی قدر بڑھ جائے گی، چاندی اور سونے کی ہم شکل دھاتیں نکل آئیں گی اور ان کی اشیا گھر گھر رواج پائیں گی

 آج کے زمانے میں اگرچہ سونا مہنگا ہے لیکن اس کی وہ قدر نہیں ہے جو آج سے پہلے تھی، مثال کے طور پر پہلے خواتین صرف سونے اور چاندی کے زیورات پہنتی تھیں لیکن آج آرٹیفشل جیولری نے سونے کی قدر میں کمی کی ہے۔

5

آخرت کے راستے سے بے پرواہی ہوگی اور شہروں کے راستے بہت خوبصورت بنائے جائیں گے۔

 آج جو دور چل رہا ہے اس پر یہ پیشگوئی بالکل فٹ بیٹھتی ہے، آج انسان آخرت سے غافل ہو کر اسی دنیا کو سجانے سنوارنے میں لگا ہوا ہے، حکومتیں بھی معاشی ترقی پر زور دیتی ہیں لیکن اخلاقی پستی پر سرکاری سطح پر کوئی توجہ نہیں دی جاتی۔

6

بازاروں میں بیٹھ کر کھانا فخر سمجھا جائے گا، تم کھانے کیلئے بھی لوہے کے ہاتھ بناؤ گے ، تمہارے دستر خوان سینے کے پاس چنے جائیں گے۔

ہماری مزید تاریخی اور دلچسپ ویڈیوز دیکھنے کیلئے "ڈیلی پاکستان ہسٹری" یوٹیوب چینل سبسکرائب کریں

مزید :

ویڈیو گیلری -روشن کرنیں -