جرم ثابت ہونے پر ملزم کو قید وجرمانے کی سزا

  جرم ثابت ہونے پر ملزم کو قید وجرمانے کی سزا

  

پشاور(نیوزرپورٹر)ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج پشاور عبدا لماجد  پشاور نے جائیداد کے تنازعے پر شہری کو قتل کرنے کے الزام میں گرفتار ملزم کو جرم ثابت ہونے پر 35سال قید اور دو لاکھ پچاس ہزار روپے مقتول کے ورثاء کو بطور دیت دینے کے احکامات جاری کردیئے جبکہ مقدمے میں نامزد معاون ملزم کو مسلسل روپوش رہنے اور عدالت میں پیش نہ ہونے پر مفرور قرار دیتے ہوئے اُنکے خلاف دائمی وارنٹ گرفتاری جاری کردی۔استعاثہ کے مطابق ملزمان زبیر اور عالمگیر ساکنان خر خوڑی مسلم آباد پشاور پر الزام ہے کہ انہوں  نے جائیداد کے تنازعے پر دو سال قبل 2019میں فائرنگ کرکے مدعی مقدمہ نجیب اللہ کے بھائی  جاوید کو قتل جبکہ بحرام کو زخمی کردیا اور موقع سے فرار ہوگئے جس کے بعد پولیس نے دونوں ملزمان کے خلاف قتل اور اقدام قتل سمیت مختلف دفعات کے تحت مقدمہ درج کردیا اور ملزم زبیر کو گرفتار کردیا۔ پولیس نے تحقیقات کے بعد چالان مکمل کرکے عدالت میں جمع کردی۔ عدالت نے ملزمان کے خلاف دائر مقدمے کی سماعت مکمل ہونے اور جرم ثابت ہونے کے بعد ملزم زبیر کو دفعہ 302میں 25سال اور دو لاکھ روپے دیت، دفعہ324میں سات سال اور 50ہزار روپے جرمانہ، دفعہ 337ڈی میں تین سال قید کی سزاء سنادی جبکہ واقعے میں ملوث ساتھی ملزم عالمگیر کو عدالت میں پیش نہ ہونے پر دفعہ 512 کاروائی کے تحت مفرور قرار دیتے ہوئے اُنکے خلاف دائمی وارنٹ گرفتاری جاری کردی۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -