چارسد ہ، ملنگ کی فائرنگ سے نوجوا ن قتل، مظاہرین نے ملزم کاگھر جلا ڈالا

چارسد ہ، ملنگ کی فائرنگ سے نوجوا ن قتل، مظاہرین نے ملزم کاگھر جلا ڈالا

  

          چارسدہ (بیورو چیف)چارسدہ میں سٹی تھانہ کے حدود پلہ ڈھیری میں فاتر العقل اور ٹانگوں سے معذور ملزم ملنگ جان کی فائرنگ سے 22سالہ نوجوان شاہ سوار کی ہلاکت پر علاقے کے عوام مشتعل ہو گئے۔ مشتعل مظاہرین نے ملزم کو از خود قتل کرنے کیلئے پولیس پر شدید پتھراؤ اور حملے کئے۔ پولیس نے مشتعل مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کا استعمال کیا اور ہوائی فائرنگ کی مگر مشتعل مظاہرین کی طر ف سے شدید مزاحمت ہوئی۔ مشتعل مظاہرین نے ملزم کا گھر مسمار کر کے جلا دیا جبکہ ملزم نے اپنی والدہ کے ہمراہ گھر کی چھت پر پناہ لے رکھی تھی جہاں دو پولیس اہلکار بھی ملزم کے ساتھ موجود تھے۔پولیس کی بھاری نفری، بکتر بند گاڑیاں، ریسکیو ٹیمیں جائے وقوعہ پر موجودرہے۔ مشتعل مظاہرین نے قانون اپنے ہاتھ میں لے کر ملزم کے گھر کو مسمار کرکے آگ لگا دی اور ملزم ملنگ جان کو اپنی والدہ سمیت چھت سے گرا کر آگ میں ڈال دیا۔جہاں ملزم ملنگ جان آگ میں جل کر موقع پر جاں بحق ہو گیا جبکہ اس کی والدہ شدید زخمی ہو گئی جن کو تشویش ناک حالت میں چارسدہ ہسپتال منتقل کیا گیا۔ قبل ازیں یہ امر قابل ذکر ہے کہ صوبائی وزیر قانون فضل شکور خان اور ڈی پی او چارسدہ آصف بہادر خان مسلسل مشتعل مظاہرین سے مذاکرات کرتے رہے مگر مظاہرین کی طرف سے ملزم کو حوالے کرنے کا مطالبہ کیا جاتا رہا جبکہ دوسری طرف پولیس ہر صورت ملزم کو گرفتار کرکے قانونی کارروائی کرنا چاہتی تھی۔ اس دوران سینکڑوں مشتعل مظاہرین نے کھیتوں میں بھی پناہ لی اور کئی گھنٹے تک پولیس کو شدید دباؤ میں رکھا۔ صوبائی وزیر قانون فضل شکور خان اور ڈی پی او چارسدہ آصف بہادر خان کی طرف سے مشتعل مظاہرین کے ساتھ متعدد بار مذاکرات ہوئے ا۔ ملزم کو والدہ سمیت آگ میں ڈالنے کے افسوس ناک واقعہ کے بعد پولیس نے پورے علاقے کا محاصرہ کرکے بڑے پیمانے پر گرفتاریاں شروع کر رکھی ہیں۔واقعہ میں سٹی تھانہ چارسدہ کے ایس ایچ او بہرمند خان سمیت متعدد پولیس اہلکار بھی زخمی ہو گئے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -