روایتی طریقہ آبپاشی سے پانی ضائع،ڈرپ سسٹم انتہائی ضروری

روایتی طریقہ آبپاشی سے پانی ضائع،ڈرپ سسٹم انتہائی ضروری

  

  ملتان ( سٹی رپورٹر)ترجمان محکمہ زراعت پنجاب کے مطابق ڈرپ نظام آبپاشی ایک بہترین نظام ہے جس میں تمام(بقیہ نمبر17صفحہ6پر)

 پودوں کو ایک ہی وقت میں پانی اور کھاد مل جاتے ہیں اور کاشتکار کا وقت بھی ضائع نہیں ہوتا۔ روائتی طریقہ آبپاشی میں پانی ضائع ہونے کے ساتھ مناسب وقت پر فصل کو دستیاب نہیں ہوتا جبکہ ڈرپ اریگیشن سسٹم سے پانی کی درست فراہمی تمام پودوں کو ایک ہی وقت پر ہو جاتی ہے۔  حکومت پنجاب ڈرپ اریگیشن سسٹم لگانے پر 60 فیصد سبسڈی فراہم کر رہی ہے جبکہ 40 فیصد کاشتکار ادا کرے گا۔ ڈرپ اریگیشن سسٹم ایک صاف ستھرا اور آسان نظام ہے جس میں کھالے بنانے کی فکر نہیں ہوتی اور نہ ہی پانی لگانے کا مسئلہ ہوتا ہے۔ اس طریقہ میں کھاد، وقت، مزدوری اور پانی کی 50 فیصد تک بچت ہوتی ہے۔ ڈرپ آبپاشی کے نظام میں پانی قطروں کی صورت میں براہ راست پودوں کی جڑوں میں داخل ہوتا ہے۔ اس طرح غیرضروری جگہوں پر پانی نہ جانے سے پانی کی بچت ہوتی ہے اور جڑی بوٹیوں کی نشوونما بھی کم سے کم ہوتی ہے۔ ترجمان کے مطابق اس نظام کے ذریعے پانی لگانے کے لیے درکار وقت بھی روائتی طریقہ آبپاشی کی نسبت کم ہوتا ہے۔ ڈرپ آبپاشی میں کھاد اور دیگر زرعی مداخل برابر مقدار میں پودوں کی جڑوں میں داخل ہوتے ہیں اس لیے پودوں کی بہتر نشوونما ہوتی ہے۔ ایسی زمین جو غیر ہموار، پوٹھواری یا ریگستانی ہو وہاں ڈرپ سسٹم ایک بہترین نظام آبپاشی ہے۔ 

ضروری

مزید :

ملتان صفحہ آخر -