مقبوضہ کشمیر: مسرت عالم دوبارہ گرفتار، تفتیشی مرکز ہمہامہ منتقل

مقبوضہ کشمیر: مسرت عالم دوبارہ گرفتار، تفتیشی مرکز ہمہامہ منتقل

  

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پولیس نے غیر قانونی طور پر نظر بند حریت رہنما اور جموںو کشمیر مسلم لیگ کے وائس چیئرمین مسرت عالم بٹ کو بانڈی پورہ کی ایک عدالت کی طرف سے ایک جھوٹے مقدمے میں ضمانت پر رہائی کے بعد دوبارہ گرفتار کر لیا ہے۔ انہیں گرفتاری کے بعد جوائنٹ انیٹرو سینٹر ( جے آئی سی) ہمہامہ منتقل کیا گیا۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق جموںو کشمیر مسلم لیگ کے جنرل سیکرٹری عبدالاحد پرہ نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ وہ مسرت عالم بٹ کی رہائی کے عدالتی احکامات لیکر سب جیل بارہمولہ گئے لیکن جیل حکام نے ان احکامات پر عمل درآمد کے بجائے مسرت عالم کوجے آئی سی ہمہامہ منتقل کر دیا۔ انہوںنے مسرت عالم کی دوبارہ گرفتاری کو انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کو ایک پولیس سٹیٹ میں تبدیل کیا گیا ہے جہاں تمام معاملات بھارتی پولیس چلا رہی ہے۔ عبدالاحد پرہ نے کہا کہ بھارتی فوج کے سابق سربراہ جنرل (ر)وی کے سنگھ نے ان کے موقف کی تصدیق کی ہے کہ مقبوضہ علاقے میں کبھی بھی جمہوریت نہیں رہی ہے اور یہاں کے تمام معاملات بھارتی فوج اور خفیہ ادارے چلا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ قابض انتظامیہ مسلم کانفرنس کے وائس چیئرمین کو تاحیات سلاخوں کے پیچھے رکھنا چاہتی ہے کیونکہ وہ جانتی ہے کہ انہوں نے 2008سے 2010کے انتفادہ کے دوران ایک اہم کردار ادا کیا تھا جس نے پورے بھارت کو ہلا کر رکھ دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ قابض انتظامیہ مسرت عالم کو بار بار گرفتار کر کے ان سے سیاسی انتقام لے رہی ہے۔

مزید :

عالمی منظر -