پادری کی گھناﺅنی حرکتیں ،دنیا بھر میں غم و غصہ

پادری کی گھناﺅنی حرکتیں ،دنیا بھر میں غم و غصہ
پادری کی گھناﺅنی حرکتیں ،دنیا بھر میں غم و غصہ

  

 روم (مانیٹرنگ ڈیسک) عیسائی پادریوں کے بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے واقعات کئی سالوں سے عالمی میڈیا کی توجہ کا مرکز بنے ہوئے ہیں لیکن سینئر پادری آرچ بشپ ویسولووسکی نے تو بد کرداری کے تمام ریکارڈ ہی توڑ دیے۔

ان صاحب کو لاکھوں لوگ اپنا مذہبی رہنماءاور نیک ترین بزرگ سمجھتے تھے لیکن ان کے خلاف بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے شدید الزامات سامنے آ گئے اور جب ان کے حجرے کی تلاشی لی گئی تو ان کے زیر استعمال کمپیوٹر پر بچوں کی ایک لاکھ سے زائد فحش فلمیں اور تصاویر برامد ہوگئیں۔

ویسولووسکی ان شرمناک جرائم میں گرفتار کیے گئے اب تک کے سینئر ترین پادری ہیں۔انہیں 2008 سے 2012 تک ڈومینکین ریپبلک کے دارالحکومت میں ویٹی کن کا سفیر مقرر کیا گیا تھا۔اس عرصے کے دوران بظاہر نظر یہ آتا ہے کہ انہوں نے بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی اور فحش فلمیں دیکھنے کے علاوہ کوئی کام نہیں کیا۔

تحقیق کاروں نے معلوم کیا کہ موصوف نے انتہائی محنت کے ساتھ تمام فلموں اور تصاویر کو سینکڑوں الگ الگ فولڈرز بنا کر ان میں محفوظ کیا ہوا تھا۔یہ بھی معلوم ہوا کہ ہزاروں فحش فلمیں انہوں نے اپنے لیپ ٹاپ پر بھی محفوظ کر رکھی تھیں تاکہ جب کبھی سفر پر نکلیں تو اپنا غلیظ شوق پورا کر سکیں۔

وہ اس سے پہلے بولیویا ، وسطی ایشیاءکے ممالک تاجکستان ، کرغیزستان ، ازبکستان اور جنوبی افریقہ کے علاوہ کوسٹاریکا ، جاپان ، سوئزرلینڈ ، ڈنمارک اور بھارت میں " مقدس فرائض" سر انجام دے چکے ہیں اور اب ان تمام ممالک میں ان کے جنسی جرائم کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -