پاکستان کو ایشین ٹائیگربنانے کے لیے اقتصادی انقلاب کی ضرورت ہے‘ایس ایم منیر

پاکستان کو ایشین ٹائیگربنانے کے لیے اقتصادی انقلاب کی ضرورت ہے‘ایس ایم منیر

  

کراچی (اکنامک رپورٹر) ٹریڈڈیولپمنٹ اتھارٹی کے چیف ایگزیکٹو ایس ایم منیر نے کہا ہے کہ پاکستان کو ایشین ٹائیگربنانے کے لیے دھرنوں کولانگ مارچ کی بجائے اقتصادی انقلاب کی ضرورت ہے،ملکی تجارتی وکاروباری سرگرمیاں مزید دھرنے اور جلوس برداشت نہیں کرسکتی ہیں اگر ملک وقوم کے مفاد میں فیصلے نہیں کیے گئے تو آئندہ آنے والی نسلوں کو ترقی یافتہ پاکستان کی بجائے ترقی پذیر ملک ہی ملے گا یہ بات انہوں نے گزشتہ شب نارتھ کراچی ٹریڈ و انڈسٹری ایسوسی ایشن کی جانب سے دئیے گئے عشائیے کے موقع پر کہی اس موقع پر وفاقی وزیرٹیکسٹائل عباس خان آفریدی ،کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدرمیاں زاہد حسین،نارتھ کراچی ایسوسی ایشن کے سرپرست اعلی نوراحمد خان،سینیٹرعبدالحسیب خان،نارتھ کراچی ایسوسی ایشن کے نومنتخب چیئرمین رشیدپوڈروالا ، سابق چیئرمین محمودرنگون والانے بھی خطاب کیا جبکہ اس موقع پر ایڈمنسٹریٹر کراچی روف اختر فاروقی، کاٹی کے صدر سید فرخ مظہر،راشد احمد صدیقی،محمدیحییٰ پولانی ،نوید بخاری ،مہتاب الدین چاولہ ،جاوید علی غوری،ادریس گیگی اوردیگربھی موجودتھے۔ایس ایم منیر نے کہا کہ کراچی میں گندگی کی ڈھیر جمع ہوچکا ہے ،دیواروں پر عجیب وغریب نعروں اور وال چاکنگ کوصاف کراناچاہیے اور تعلیمی اداروں میں قائد اعظم محمد علی جناح سمیت پاکستان کے بارے میں بچوں کو آگاہی فراہم کرنے کی اشد ضرورت ہے ۔انہوں نے کہا کہ ملک میں جاری دھرنوں اور جلوسوں کے باعث ملکی برآمدات میں ساڑھے پانچ فیصد سے زائد کمی رونما ہوگئی ہے لہذا تحریک انصاف فوری طورپر دھرنے ختم کرنے کا اعلان کرے۔

وفاقی وزیر ٹیکسٹائل عباس خان آفریدی نے کہا کہ ملک میں ٹیکسٹائل سیکٹر کی اہمیت اورافادیت کو نظراندازکیاگیا جوکہ روزگارفراہم کرنے والا سب سے بڑا سیکٹر ہے ،انہوں نے کہا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر سے وابستہ تاجروصنعتکار ویلیو ایڈیشن کی جانب اپنی توجہ مرکوز کرے اور بیرونی ممالک منڈیوں میں روایتی مصنوعات کو متعارف کرایا جائے تو ٹیکسٹائل سیکٹر میں نیارحجان پیدا ہوگا اورملکی برآمدات میں اضافہ بھی رونما ہوجائیگا۔انہوں نے کہا کہ وزارت ٹیکسٹائل زمین حقائق کو مدنظررکھتے ہوئے منصوبہ بندی کررہی ہے اور روایتی مصنوعات ولومزکے ذریعے تیار ہونے الی مصنوعات کی ترقی کے لیے ایکشن پلان ترتیب دیا جارہا ہے ۔اس موقع پر سینیٹرعبدالحسیب خان نے کہا کہ ملک کو درپیش مسائل اور اسکے حل کے لیے تاجربرادری اور حکومتی سطح پر رابطوں کافقدان ہے ،انہوں نے کہا کہ حکومتی اداروں میں جاری کرپشن کاخاتمہ بے حدضروری ہے جسکے لیے تاجربرادری کو یکجا ہوجانا چاہیے ۔کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر میاں زاہد حسین نے کہا کہ ملکی سطح پر تاجروصنعتکاربرادری یونائیٹڈ بزنس مین پینل کے سرپرست اعلی ایس ایم منیراور چیئرمین افتخارعلی ملک کی قیادت میں متحد ہوچکی ہے اور آئندہ ایف پی سی سی آئی کے ہونے والے انتخابات میں بھرپورکامیابی کے بعد تاجروصنعتکاربرادری کی خدمت کی شفاف پالیسی اختیار کرتے ہوئے تاجروصنعتکار برادری کااعتماد بحال کرنے میں کامیاب رہے گی۔نارتھ کراچی ایسوسی ایشن آف ٹریڈاینڈانڈسٹری کے سرپرست اعلی نوراحمدخان نے کہا کہ تاجروں کودرپیش مسائل کے حل کے لیے حکومتی موثراقدامات کی ضرورت ہے،تاجروں کودپیش سیلز ٹیکس اور ریفنڈ کافوری طورپر حل کیا جائے تاکہ برآمدی سرگرمیوں کو فروغ دیاجاسکے ۔

 

مزید :

کامرس -