حاجی افضل کی زیرِصدارت صرافہ اینڈ جیولرز ایسوسی ایشن کا اجلاس

حاجی افضل کی زیرِصدارت صرافہ اینڈ جیولرز ایسوسی ایشن کا اجلاس

  

لاہور(کامرس رپورٹر) لاہور ڈویژن صرافہ اینڈ جیولرز ایسوسی ایشن اور اس میں شامل پچاس سے ذائد صرافہ تنظیموں نے ایک متفقہ قرارداد کے ذریعے جیولرز پر جی ایس ٹی عائد کیئے جانے کے فیصلے پر قطعی طور پر غیر منطقی غیر آئینی قراردیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ اس کو فوری واپس لیا جائے۔1998ءمیں حکومت کے ساتھ طے شدہ معاہدے کے مطابق جیولرز اس کے دائرے کار میں نہیں آتے ہیں۔اس کامطالبہ گزشتہ روز یہاں حاجی محمد افضل کی زیرِصدارت ہونے والے اجلاس میں کیا گیا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد احمد نے 1998ءمیں مسلم لیگ (ن) کی حکومت میںجیولرز نے28دن اپنے موقف کو درست ثابت کرنے کے لیے اپنا کاروبار بند رکھا تھا۔جبکہ سی بی آرنے ملک بھر کے جیولرز نمائندوں کے ساتھ ملاقات میں ہمارے اس موقف کو درست تسلیم کیا اور جی ایس ٹی کو واپس لیا تھا۔انہوں نے کہا کہ ملکی کاروباری حالات سونے کی بڑھتی ہوئی بے تحاشہ قیمتوں نے ملکی جیمز اینڈ جیولری سیکٹر کو مکمل طور پر مفلوج کر کے رکھ دیا ہے ۔اس سیکٹر کا کاریگر طبقہ ان حالات کی وجہ سے دوسر ے کاروبار سے منسلک ہورہا ہے۔انہوں نے کہا حکومت ایک طرف بجلی کے بلوں پر ڈبل جی ایس ٹی وصول کر رہی ہے جبکہ دوسری طرف ہمیں جی ایس ٹی میں رجسٹریشن کروانے کے لیئے نوٹسز جاری کیئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے اگر ہمارے اس جائز مطالبے کوتسلیم نہ کیا تو بہت جلد پنجاب بھر کی صرافہ تنظیموں کا ایک نمائندہ اجلاس لاہورفیڈریشن آفس میں طلب کیا جائے گا۔جس میں آئندہ کے لائحہ عمل کی منظوری دی جائے گی۔

صرافہ ایسوسی ایشن

مزید :

علاقائی -