پی ایم اے کی تقریب ”گو نواز گو“ کے نعروں کے باعث” اکھاڑا “بن گئی

پی ایم اے کی تقریب ”گو نواز گو“ کے نعروں کے باعث” اکھاڑا “بن گئی

  

لاہور (جنرل رپورٹر)پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن پنجاب کی جانب سے عہدیداروں کی حلف برداری کے لئے گزشتہ روز منعقد کی جانے والی تقریب مظفر گڑھ سے پی ایم اے کے عہدیدار اورپاکستان تحریک انصاف کے پنجاب کونسل کے رکن کی جانب سے ”گو نواز گو“ کے نعروں کے باعث سیاسی خلفشار کاشکار ہوگئی جبکہ مذکورہ ڈاکٹرکو چپ کروانے کی کوشش میں ناکامی پر ڈاکٹرز کمیونٹی کی جانب سے اسے تھپڑمارے گئے جس پر ڈاکٹر زخمی ہوگئے اور تقریب مچھلی منڈی بن گئی جبکہ اس موقع پر تقریب کے مہمان خصوصی مشیربرائے صحت خواجہ سلمان رفیق ڈاکٹرز کو لڑائی جھگڑے سے روکنے کے لئے سمجھاتے رہے ۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کی جانب سے پنجاب کے عہدیداروں کے لئے مقامی کلب میں تقریب حلف برداری منعقد کی گئی جس کے مہمان خصوصی مشیر برائے صحت خواجہ سلمان رفیق اور سیکرٹری صحت جواد رفیق ملک تھے تقریب میں اس وقت بدمزگی پیدا ہوئی جب مشیر برائے صحت خطاب کر رہے تھے تو ضلع مظفر گڑھ سے پی ایم اے کے جوائنٹ سیکرٹری اور پاکستان تحریک انصاف پنجاب کی کونسل رکن ڈاکٹر سلمان پٹل کی جانب سے تقریب کی درمیان جھنڈا نکال کر ” گونواز گو“ کے نعرے لگانے شروع کئے گئے جس پر وہاں موجود پی ایم اے کے عہدیداروں سمیت دیگر ڈاکٹر ز نے انہیں چپ کروانے کی کوشش کی تو انکے باز نہ آنے پر ہاتھا پائی شروع ہوگئی اور ڈاکٹرز کی جانب سے انہیں تھپڑ مارے گئے جس کے باعث انکے چہرے پر ناخن لگنے پر زخم آئے جبکہ اس دوران خواجہ سلمان رفیق یہ کہتے رہے کہ انہیں احتجاج کرنے کا موقع دیا جائے جبکہ اسکے باعث تقریب میں شدید بدمزگی پیدا ہوگئی اور ڈاکٹرز کی جانب سے ایک دوسرے پر شدید تنقید کی گئی جبکہ ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ یہ پی ایم اے کی تقریب تھی کوئی سرکاری تقریب نہ تھی اگر مذکورہ ڈاکٹراپنا احتجاج ریکارڈ کروانا چاہتے تھے تو تقریب سے باہر جاکر کرواتے جبکہ ڈاکٹرز کی جانب سے تشدد کے عنصر کی بھی پرزور مذمت کی گئی ۔ اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے متاثرہ ڈاکٹر سلمان پٹل کا کہنا تھا ہم پڑھے لکھے لوگ ہیں اور میں پی ایم اے کا جوائنٹ سیکرٹر ی اور ضلع مظفر گڑھ سے پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا کونسل ممبر ہوں اور احتجاج کرنا میرا حق ہے اور جب میں نے احتجاج کیا تو میری کمیونٹی کے ” گلو بٹوں“ نے مجھے پیٹنا شروع کردیا انہوںنے کہاکہ حکومت کے خلاف احتجاج میر احق ہے انہوں نے کہاکہ مجھے میرا پارٹی پرچم واپس دیا جانا چاہئے ۔

تقرےب

مزید :

صفحہ اول -